پاکستان کی بلند ترین عمارت کا افتتاح

٭3 / جنوری 2005ء کو وزیراعظم شوکت عزیز نے کراچی کی آئی آئی چندریگر روڈ پر واقع پاکستان کی بلند ترین عمارت ایم سی بی ٹاور کا افتتاح کیا۔ ایم اسی بی ٹاور کی کل بلندی 116 میٹر ہے اور یہ 3 بیسمنٹ اور 29 منزلوں پر مشتمل ہے۔ ایم سی بی ٹاور کا پلاٹ ایریا2500 مربع گز ہے جبکہ اس کا کورڈ ایریا 21285 مربع میٹر ہے۔ایم سی بی ٹاور کی تعمیر کا آغاز 2000ء میں ہوا تھا اور اس کے آرکیٹیکٹ ارشد شاہد عبداللہ تھے۔ایم سی بی ٹاور کی تعمیر سے قبل پاکستان کی بلند ترین عمارت ہونے کا اعزاز حبیب بنک پلازہ کے پاس تھا جس کی تعمیر 1971ء میں مکمل ہوئی تھی۔

———————-
دنیا کا سب سے بڑا کرتہ

** 3جنوری 2008ء کو کراچی میں اپریل پاکستان کے اہتمام میں دنیا کے سب سے بڑے کرتے کی نمائش کا آغاز ہوا۔ اس کُرتے کی لمبائی 101فٹ اور چوڑائی 59فٹ 3انچ تھی جبکہ آستین کی طوالت 57فٹ تھی۔ اس کُرتے کو دیپک پروانی نے ڈیزائن کیا تھا اور اس کی سلائی کے لیے گل احمد فیبرکس نے 800گز کپڑا فراہم کیا تھا۔ 4فروری 2008ء کو گنیز بک نے اسے دنیا کا سب سے بڑا کرتا تسلیم کرنے کا اعلان کر دیا

۔————
شوکت علی ناشاد کی وفات
٭3 / جنوری 1981ء کو پاکستان کے معروف فلمی موسیقار شوکت علی ناشاد لاہور میں وفات پاگئے اور سمن آباد کے قبرستان میں آسودۂ خاک ہوئے۔شوکت علی ناشاد دہلی میں پیدا ہوئے تھے۔ ان کے فلمی کیریئر کا آغاز 1947ء میں بمبئی میں بننے والی فلم دلدار سے ہوا تھا۔ابتدا میں وہ شوکت دہلوی کے نام سے موسیقی ترتیب دیتے تھے۔ 1953ء میں نخشب جارچوی نے موسیقار نوشاد سے اختلافات کے باعث انہیں ناشاد کا فلمی نام دے کر ان سے اپنی فلم نغمہ کی موسیقی مرتب کروائی۔شوکت علی ناشاد نے ہندوستان کی 30 فلموں کی موسیقی ترتیب دی۔ 1963ء میں وہ پاکستان آگئے جہاں انہیں مزید 60 فلموں کی موسیقی ترتیب دینے کا موقع ملا۔ ان کی مشہور پاکستانی فلموں میں مے خانہ، جلوہ، ہم دونوں، تم ملے پیار ملا، سالگرہ، سزا ، افسانہ، چاند سورج، رم جھم، بندگی، بہارو پھول برسائو ،ساجن رنگ رنگیلا، زینت اور شکوہ کے نام سرفہرست ہیں۔مشہور موسیقار واجد علی ناشاد ان کے فرزند تھے

وقار زیدی ۔ کراچی

SHARE

LEAVE A REPLY