واشنگٹن سمیت دنیا بھر میں ٹرمپ مخالف احتجاج کا سلسلہ جاری ہے، پیرس، برسلز، برلن اور سڈنی سمیت دنیا میں 670 سے زیادہ مقامات پر ہونے والے مظاہروں میں خواتین کی بڑی تعداد نے بھی شرکت کی، مظاہرے میں شریک گلوکارہ میڈونا نے بھی اپنے دل کی خوب بھڑاس نکالی۔

نئے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی مشکلات کم نہ ہوئیں، واشنگٹن ڈی سی میں ڈونلڈ ٹرمپ کے صدر بننے کے خلاف ایک بڑا مارچ کیا گیا۔ اس دوران ہونے والے مظاہرے میں بیشتر فلمی اداکاروں اور انسانی حقوق کی علمبردار خواتین نے بھی شرکت کی، معروف گلوکارہ میڈونا نے بھی احتجاجی مارچ میں شرکت کر کے خواتین کا حوصلہ بڑھایا اور ٹرمپ کی صدارت کے خلاف دل کی بھڑاس نکالی۔

انتظامیہ کے مطابق امریکا بھرمیں ہونے والے احتجاجی مظاہروں تقریبا ً20 لاکھ سے زائد افراد نے شرکت کی۔

احتجاجی مارچز میں شریک خواتین نے ’’میں خوفزدہ ہوں‘‘ اور ’’ہمیں خدشات ہیں‘‘ کے بینر اٹھا رکھے تھے۔

واشنگٹن کے علاوہ ڈلاس، ڈینور، شکاگو، انڈیاناپولس، نیویارک، پورٹ لینڈ اور آک لینڈ سمیت مختلف شہروں میں ٹرمپ مخالف مظاہرے جاری ہیں۔

ادھر لندن میں بھی ہزاروں خواتین نے ڈونلڈ ٹرمپ کے صدر بننے کے بعد احتجاجی مارچ کیا۔ مظاہرین امریکی سفارت خانے کے باہر جمع ہوئے اور جنسی تشدد اور ڈونلڈ کی پالیسیوں کے خلاف احتجاج کیا ۔

ماسکو سے مانچسٹرتک دنیاکے673شہروں میں احتجاج کیاگی

SHARE

LEAVE A REPLY