ایران کی جانب سے کیے گئے بیلسٹک میزائل تجربے کے بعد امریکا کی عائد کردہ نئی پابندیوں کے خلاف چین نے اپنا احتجاج ریکارڈ کرایا ہے کیوں کہ پابندی کی زد میں بعض چینی شہری اور کمپنیاں بھی آرہی ہیں۔

واضح رہے کہ امریکا کی جانب سے 25 افراد اور اداروں پر عائد کی گئی پابندیوں کے بعد یہ شخصیات اور کمپنیاں امریکی مالی نظام تک رسائی حاصل نہیں کرسکتی اور نہ ہی امریکی کمپنیوں سے کوئی لین دین کرسکتی ہیں۔

پابندیوں کا شکار ہونے والی ایران کی 13 شخصیات اور 12 کمپنیوں کو کچھ ثانوی پابندیوں کا بھی سامنا ہے جس کے تحت غیر ملکی کمپنیاں اور شخصیات ان سے کسی قسم کا لین دین نہیں کرسکتے اور اگر وہ ایسا کرتے ہیں تو انہیں بھی امریکا کی جانب سے بلیک لسٹ کردیا جائے گا۔

اس فہرست میں دو چینی کمپنیاں اور تین چینی افراد بھی شامل ہیں تاہم امریکی محکمہ خزانہ نے پابندی کے حوالے سے جاری اپنے بیان میں ان میں سے صرف ایک شخص چن شیانہوا کو چینی شہری بتایا ہے۔

SHARE

LEAVE A REPLY