برطانوی پولیس کا کہنا ہے کہ پاکستان سے آنے والے مسافر طیارے کو جہاز میں موجود انتشار پھیلانے والے ایک مسافر کے باعث ہنگامی طور پر اسٹینسٹڈ ایئرپورٹ پر اتارا گیا۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی ’رائٹرز‘ کے مطابق ایسیکس پولیس نے اپنے بیان میں کہا کہ ’اس بات پر یقین نہیں کیا جاسکتا کہ طیارے میں ہائی جیک کی صورتحال تھی یا دہشت گردی سے متعلق کوئی معاملہ تھا۔‘

بیان کے مطابق ’طیارہ اس وقت ایئرپورٹ پر ہی موجود ہے اور افسران معاملے کی تحقیقات کر رہے ہیں۔‘

قبل ازیں برطانوی وزارت دفاع کا کہنا تھا کہ ’طیارے کو رائل ایئر فورس کے ٹائیفون لڑاکا طیاروں نے مشتبہ چیز کی موجودگی کی اطلاع پر اپنی حفاظت میں اتارا۔‘

بیان میں کہا گیا کہ ’ٹائیفون ایئرکرافٹ نے کوئیک ری ایکشن الرٹ جاری کیا، جس کے بعد رائل ایئر فورس نے مسافر طیارے کو اپنی نگرانی میں اسٹینسٹڈ ایئرپورٹ پر اتار لیا۔

پاکستان انٹرنیشنل ایئرلائن (پی آئی اے) کے ترجمان دانیال گیلانی کا کہنا تھا کہ ’برطانوی انتظامیہ کو نامعلوم فون کال کے ذریعے پی آئی اے کی لاہور سے ہیتھرو جانے والی پرواز پی کے 757 کے حوالے سے لینڈنگ سے قبل کچھ مبہم سیکیورٹی خطرہ موصول ہوا، جس کے بعد ان کے اسٹینڈرڈ طریقہ کار کے مطابق طیارے کو اسٹینسٹڈ ایئرپورٹ کی جانب موڑ دیا گیا۔‘

پی آئی اے کے لاہور سے لندن جانے والے طیارے میں 200 سے زائد افراد سوار تھے اور اسے ہیتھرو ایئرپورٹ پر لینڈ کرنا تھا۔

SHARE

LEAVE A REPLY