حالیہ بم دھماکوں کے بعدملک بھر میں شدت پسندوں اور دہشت گردی کے نیٹ ورکس کے خلاف آپریشن تیزکردیا گیا،سرچ آپریشنزمیں صوابی سے 244مشتبہ افرادگرفتار، کوئٹہ سے 35افغان باشندےگرفتار، منڈی بہاءالدین سے143، راولپنڈی سے 87 ، حافظ آباد سے16اور ڈیرہ غازی خان سے 3 مشتبہ افراد کو حراست میں لے لیا گیا۔

ادھر کوئٹہ سے تین درجن کے قریب افغان باشندوں کو گرفتارکرلیا گیا ۔

پنجاب کے مختلف علاقوں میں سرچ آپریشن کرکے سیکورٹی فورسزنےڈھائی سوافرادکوحراست میں لے لیا ۔منڈی بہاءالدین سے143، حافظ آباد سے16اور راولپنڈی سے 87 اور ڈیرہ غازی خان سے 3 مشتبہ افراد حراست میں لے لئےگئے۔

حافظ آباد کے مختلف علاقوں میں پولیس اورحساس اداروں نے کومبنگ آپریشن کیا اور 16ملزمان کو گرفتار کرکے اور منشیات برآمد کرلی۔

راولپنڈی کےعلاقوں راول ٹاؤن،ڈبل روڈ، کمرشل مارکیٹ، وارث خان ، کینٹ اور دیگر علاقوں میں سرچ آپریشن کئےگئے۔ اس دوران ہوٹلوں اور گیسٹ ہاؤسز سے نامکمل کوائف رکھنے والے 87افرادکو حراست میں لیاگیا۔ شہر کے داخلی راستوں پر پولیس اور فوج کی مشترکہ چوکیوں کی تعداد چھ سے بڑھا کر بارہ کر دی گئی ہے۔

دوسری جانب منڈی بہاالدین میں پولیس اور محکمہ انسداد دہشت گردی نے ایک بازار،رنمل شریف اورضلع بھر کی افغان بستیوں میں کارروائی کی ، جس کے دوران افغان باشندوں سمیت 143مشتبہ افراد کو گرفتار کیا گیا۔

علاوہ ازیں ڈیرہ غازی خان کے فریدی بازارمیں پولیس نے کارروائی کرکے غیر قانونی مقیم 3افغان باشندو ں کو گرفتار کرلیا۔

SHARE

LEAVE A REPLY