ماڈل ایان علی کا نام ای سی ایل سے خارج نہ کرنے کیخلاف توہین عدالت کی درخواست کی سماعت سندھ ہائیکورٹ میں ہوئی، ایان علی کے وکیل وفاق کی اپیل پر سپریم کورٹ کے حکم کی کاپی پیش نہ کرسکے۔سندھ ہائیکورٹ نے سپریم کورٹ کے حکم نامے کی کاپی طلب کرلی ۔

عدالت کے استفسار پر ایان علی کے وکیل نے بتایا کہ سپریم کورٹ نے وفاق کی اپیل بنیادی سطح پر ہی مسترد کردی تھی۔

جس پر جسٹس فاروق شاہ نے ریمارکس دیے کہ سپریم کورٹ کے حکم نامے کی کاپی کہاں ہے؟سپریم کورٹ نے کچھ نا کچھ تو حکم دیا ہوگا۔عدالت نے 3 مارچ کو سپریم کورٹ کے حکم نامے کی کاپی طلب کرتے ہوئے سماعت ملتوی کردی۔

درخواست میں مؤقف اختیارکیاگیا تھا کہ سندھ ہائیکورٹ نے 19 جنوری کوایان علی کا نام ای سی ایل سے خارج کرنے کا حکم دیا تھا۔حکم کے باوجود ماڈل گرل کا نام ای سی ایل سے خارج نہیں کیا جارہا لہٰذا توہین عدالت کی کارروائی کی جائے

SHARE

LEAVE A REPLY