پاکستان کے معروف فلمی اداکار محمد علی 19 مارچ 2006 کواتوار کے روز لاہور میں انتقال کر گئے تھے ۔ ان کی عمر انہتر برس تھی۔ وہ کچھ عرصے سے گردوں کے عارضے میں مبتلا تھے۔
محمد علی نے انیس سو باسٹھ میں فِلم ’چراغ جلتا رہا‘ سے فلمی کیرئر کا آغاز کیا تھا اور جلد ہی ان کا شمار ملک کے معروف فلمی اداکاروں میں کیا جانے لگا۔

انہوں نےاپنے فلمی کیرئر میں تین سو زیادہ فلموں میں کام کیا اور دو عشروں سے زیادہ عرصے تک پاکستان کے فلمی افق پر چھائے رہے۔چند برس قبل محمد علی نے بی بی سی ریڈیو کی مہ پارہ صفدر کو ایک یادگار انٹرویو دیا تھا۔ انٹرویو سننے کے لیئے دیےگئے لنک پرکلک کریں۔

‎محمد علی 10 دسمبر 1938 کو ہندوستان کے شہر رام پور میں پیدا ہوئے لیکن قیام پاکستان کے بعد ان کا خاندان حیدرآباد میں آکرآباد ہوا ۔سٹی کالج حیدرآباد سے گریجویشن کے بعد محمد علی نے انیس سو چھپن میں حیدرآباد ریڈیو سٹیشن سے بطور براڈکاسٹر اپنے فنی کیریر کا آغاز کیا ۔

ان کی بھرپور آواز نے انہیں ایک بہترین براڈکاسٹر کی حیثیت سے منوایا یہی نہیں محمد علی اپنی آواز کی بدولت فلمی دنیا تک پہنچنے میں کامیاب ہوئے ان کی پہلی فلم چراغ جلتا رہا کے نام سے انیس سو باسٹھ میں ریلیز ہوئی اس فلم کی کامیابی کے بعد محمد علی کامیابیوں کے سفر پرچل نکلے

محمد علی نے کل دو ستتر فلموں میں کام کیا جن میں دوسو اڑتالیس اردو سترہ پنجابی اور آٹھ پشتو ں فلمیں شامل ہیں ۔محمد علی کی آخر فلم دم مست قلندر انیس سو پچانوے میں ریلیز ہوئی ان کی فلموں کی زیادہ تر ہیروئن ان کی بیگم زیبا تھیں۔ محمد علی انیس مارچ دو ہزار چھ کو لاہور میں انتقال کر گئے تھے

ماہ پارہ صفدر۔لندن

SHARE

LEAVE A REPLY