دیوتاؤں سی تیری خاموشی۔ثانیہ شیخ

0
53

دیوتاؤں سی تیری خاموشی
میری جھولی میں گرتی
رہتی ہے
سر جھکائے میں بیٹھ رہتی ہوں
ایک ایک سانس گنتی رہتی ہوں
کب ترے لمس کا
کوئی سکہ
آ ن چمکے مری ہتھیلی پر!!

ثانیہ شیخ

SHARE

LEAVE A REPLY