امریکا میں تعینات پاکستانی سفیر اعزاز چوہدری کا کہنا ہے کہ حقانی نیٹ ورک نہ ہمارا دوست اور نہ پراکسی جبکہ پاکستان کو دہشت گردی کی معاون ریاست قرار دیا جانا چند ذہنوں کی سوچ ہے۔

برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے حقانی نیٹ ورک سے متعلق اعزاز چوہدری کا کہنا تھا کہ ’وہ نہ ہمارے دوست ہیں اور نہ ہی ہماری پراکسی ہیں، جبکہ ہم نہیں چاہتے کہ وہ امریکا یا افغانستان سمیت کسی کے خلاف بھی کسی قسم کا تشدد کریں۔‘

انہوں نے کہا کہ ’پاکستان کی حقیقت کا شائد اس وقت امریکا میں ادراک نہیں ہے، پاکستان نے جس طریقے سے دہشت گردی کے خلاف جنگ کی کوئی دوسری قوم ایسی جنگ نہیں کرسکتی، ہم نے دہشت گردوں کے ٹھکانوں اور افغان جہاد کے زمانے سے پیدا ہونے والے مسائل کو ختم کیا، جبکہ آج پاکستان بڑی تیزی سے آگے بڑھ رہا ہے۔‘

پاکستان کو دہشت گردی کی معاون ریاست قرار دیئے جانے کے حوالے سے اعزاز چوہدری نے کہا کہ ’یہ بات صرف چند ذہنوں کی سوچ ہے اور اِس کا حقائق سے کوئی تعلق نہیں۔‘

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے پاکستان سے متعلق خیالات کے بارے میں اعزاز چوہدری کا کہنا تھا کہ ’اگر کسی کو ڈونلڈ ٹرمپ کے پاکستان کے حوالے سے خیالات جاننے ہیں تو اس بیان کو پڑھے جو انہوں نے پاکستانی وزیر اعظم نواز شریف کے ساتھ بات چیت کے دوران دیا۔‘

SHARE

LEAVE A REPLY