افغانستان کے صوبے خوست میں ایئرپورٹ کے قریب بم دھماکے کی اطلاع موصول ہوئی ہے جس میں ہلاکتوں کا خدشہ ظاہر کیا جارہا ہے۔

افغان خبر رساں ادارے خامہ پریس کی رپورٹ کے مطابق دھماکا افغانستان کے جنوب مشرقی صوبے خوست میں ایک فوجی اڈے کے قریب ہوا۔

ابتدائی رپورٹ کے مطابق دھماکا خود کش کار بم کے ذریعے گیا جب کہ وزارت داخلہ نے بھی دھماکے کی تصدیق کردی ہے۔

وزارت داخلہ کے ترجمان نجیب دانش نے بتایا کہ دھماکا مقامی وقت کے مطابق تقریباً ایک بجے کے قریب سنا گیا۔
انہوں نے کہا کہ تاحال دھماکے سے ہونے والے نقصان سے متعلق اطلاعات موجود نہیں ہیں اور ریسکیو ٹیمیں جائے وقوع کی جانب روانہ ہوگئیں ہیں۔

کسی تنظیم کی جانب سے دھماکے کی ذمہ داری قبول نہیں کی گئی ہے۔

یہ دھماکا ایسے موقع پر کیا گیا ہے جب امریکی وزیر دفاع جم میٹس غیر اعلانیہ دورے پر افغانستان میں موجود ہیں جبکہ یہ ان کا پہلا دورہ افغانستان ہے۔

جم میٹس افغان صدر اشرف غنی سے ملاقات کریں گے اور یہ افغانستان میں امریکا کی جانب سے سب سے بڑے غیر جوہری بم گرائے جانے کے بعد اہم دورہ سمجھا جارہا ہے۔

خیال رہے کہ پیر کو افغان آرمی چیف جنرل قدم شاہ شاہم اور وزیر دفاع عبداللہ خان حبیبی نے بھی اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دیا ہے۔

ان دونوں عہدے داروں نے 21 اپریل کو شمالی افغانستان میں صوبہ بَلخ کے دارالحکومت مزار شریف کے مضافات میں قائم فوجی اڈے میں ہونے والے طالبان کے حملے میں 100 سے زائد فوجیوں کی ہلاکت کے بعد عہدے سے استعفیٰ دیا۔

اس واقعے کے بعد آرمی چیف اور وزیر دفاع پر استعفیٰ دینے کے لیے دباؤ بڑھ رہا تھا

SHARE

LEAVE A REPLY