بھارت کی شمال مشرقی ریاست آسام میں گائے چرانے کے الزام میں دو مسلمانوں کو قتل کر دیا گیا ہے۔ پولیس افسر دیباراج اوپدیاو نے بتایا کہ گاؤں والوں کے بقول ابو حنیفہ اور ریاض الدین علی چراہ گاہ سے گائے چرانے کی کوشش کر رہے تھے۔

انہوں نے مزید بتایا کہ گاؤں والوں نے ان کا پیچھا کیا اور پھر ان پر لاٹھیوں اور ڈنڈوں سے حملہ کر دیا۔ پولیس ن۔ ان دونوں لڑکوں کے قتل کا مقدمہ درج کر کے دو افراد کو پوچھ گچھ کے لیے حراست میں لے لیا ہے۔

بھارت میں گائے کی غیر قانونی تجارت کے الزام کے تحت گزشتہ دنوں کے دوران کئی مسلمانوں کو قتل کیا جا چکا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق آسام کے ضلع ناگون میں گاو ٔرکشا کے نام پر “ابو حنیفہ اور ریاض الدین “نامی نوجوانوں کو انسانیت سوز تشدد کے بعد قتل کردیا گیا۔

مقامی پولیس کے مطابق مشتعل ہجوم نے دونوں نوجوانوں پر گائے چوری کا الزام لگایا اور شدید تشدد کانشانہ بنایا۔

بی جے پی کی حکومت بننے کے بعد بھارت میں انتہا پسندوں کی جانب سے گاؤ رکشا کے نام پر مسلمانوں پر حملوں کے واقعات میں خطرناک حدتک اضافہ ہوا ہے

SHARE

LEAVE A REPLY