مسلم پرسنل لاء ۔از۔ عزیزبلگامی

0
65

خدا کے دین پہ طاغوت حملہ آور ہے

یہ بحرِ شیطنت و جہل کا شناور ہے
ہے زَد میں اہلِ ہوس کی ،نظامِ ربانی

نظر میں اِن کی کھٹکتی ہے قومِ قرآنی

ہمارے عائلی قانون کے یہ دُشمن ہیں

نظامِ مصطفوی ؐکے عدو یقیناًہیں

مخالفت ہے شریعت کی صبح و شام یہاں

کہ گالیوں سے ہے ترآج کل ہر ایک زباں
دروغ گوئی کے خادم ہیں، بد کلام ہیں یہ
جو اقتداء میں ہماری تھے ، اب امام ہیں یہ
مقننہ بھی حکومت کی، شر کی قائل ہے

عدالتوں کی فضاؤں میں زہر شامل ہے
عدالتیں بھی شریعت سے بیر رکھتی ہیں

ہمارے’’لآ‘‘ کی حقیقت سے بیر رکھتی ہیں
تلک، جہیز، کے رسم ورواج حاوی ہیں

نظر میں اِن کی ز ن و شو یہاں مساوی ہیں
فضولیات پہ زر اپنا یہ لُٹاتے ہیں

یہ بھینٹ شادی کی بارات پر چڑھاتے ہیں
نہیں کسی کو بھی اسراف پر پشیمانی

فضول خرچی میں اِن کا نہیں کوئی ثانی

انہیں خبر نہیں اِسلام دینِ فطرت ہے
خدا کا دین توہر قوم کی امانت ہے

معاشرے کو یہ پاکیزگی بخشتا ہے

زمیں پہ عدل کو قائم ضرور کرتا ہے
بہت مطابقِ فطرت اُصول ہیں اِس کے

یہ اعتدال و توازن سے ہی عبارت ہے

نظامِ حق ہے یہ دیں،پرسنل ہوا کیسے!
یہ زندگی سے ہر اک، بے دخل ہوا کیسے!

SHARE

LEAVE A REPLY