آپ ذیابیطس ٹائپ ٹو کے شکار ہیں تو ایک آسان سا ٹیسٹ آپ کو مختلف پیچیدگیوں سے بچانے میں مددگار ثابت ہوسکتا ہے۔

یہ بات برطانیہ میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آئی۔

ڈائیبیٹس یوکے کی تحقیق میں بتایا گیا کہ ذیابیطس کے شکار افراد میں پیروں کے مسائل پیدا ہونے کا خطرہ بہت زیادہ ہوتا ہے جس کی وجہ بلڈ شوگر کی سطح بڑھنے سے ہونے والا نقصان ہے۔

اس کے نتیجے میں پیروں میں ناسور بن جانے والے زخموں سمیت اعضاءسے محرومی کا بھی امکان ہوتا ہے۔

ویسے تو طبی ماہرین مریضوں کو مشورہ دیتے ہیں کہ ہر سال پیروں کا معائنہ ماہرین سے کرایا جانا چاہئے تاہم ایسا بہت کم افراد کرتے ہیں۔

تاہم تحقیق میں کہا گیا ہے کہ سالانہ معائنے سے ہٹ کر لوگوں کو پیروں کی انگلیوں کو چھونے کا ٹیسٹ کرکے اس بات کو یقینی بنانا چاہئے کہ ان کے پیر اب بھی حساس ہیں یا نہیں۔

تحقیق کے مطابق یہ ٹیسٹ بہت آسان ہے، اس کے لیے بس دونوں پیروں کی تین، تین انگلیوں کو چھو کر جاننے کی کوشش کریں کہ لمس کس حد تک محسوس ہوا۔

محققین کا کہنا تھا کہ ان انگلیوں کو انتہائی نرمی سے چھوئیں اور اسے دبانے یا چٹکی لینے سے گریز کریں۔

محققین کا کہنا تھا کہ اگر انگلیوں کو چھونے کا احساس نہیں ہوتا تو یہ انفیکشن کے خطرات کو مزید بڑھا دیتا ہے جبکہ زخم ہونے کی صورت میں پیروں سے محرومی کا بھی امکان ہوتا ہے۔

انہوں نے مشورہ دیا کہ آپ نے کسی مسئلے کو دیکھا ہو یا کوئی تشویش ہو تو فوری طور پر ڈاکٹر سے رجوع کریں کیونکہ ذیابیطس ہونے کی صورت میں پیروں کے مسائل انتہائی تیزی سے بڑھتے ہیں۔

SHARE

LEAVE A REPLY