نعت رسول مقبول ﷺ از ذوالفقار نقوی

0
69

انکار کی سبیل کر ، اقرار لے کے آ
اپنی زبان ِ گُنگ پہ گفتار لے کے آ

طہ کا جس میں رنگ ہو ، خوشبوئے ھل اتا
والیل کے جمال سا معیار لے کے آ

جس میں خریدے جا سکیں دُر ہائے مصطفی ؐ
سودائے عشق کا وہی بازار لے کے آ

الحاد سر اُٹھائے ھے دہلیز پر کھڑا
ایمان میں بجھی ہوئی تلوار لے کے آ

نخوت کے پیڑ کیوں اُگیں ارض ِ خلوص پر
احمد ؐ کے در سے غنچہ ء ایثار لے کے آ

سب ساکنان ِ قصر ہیں بے کل، تو چھوڑ دے
اُس بوریا نشین سا مختار لے کے آ

LEAVE A REPLY