شام کے مشرقی حصے میں ہونے والی امریکی فضائی کارروائی میں داعش کی نیوز ایجنسی ’اعماق‘ کے بانی اور ان کی بیٹی ہلاک جبکہ ان کی اہلیہ زخمی ہوگئیں۔

برطانوی خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس (اے پی) کی رپورٹ کے مطابق داعش نے اب تک اعماق نیوز ایجنسی کے بانی باراک کادق کی مبینہ ہلاکت کی تصدیق نہیں کی ہے، تاہم شامی رضاکاروں کا کہنا تھا کہ باراک کادق داعش کی قیادت کے بہت قریب تھے، انھوں نے ان کا اعتماد حاصل کیا اور وہ مبینہ طور پر ابو بکر البغدادی سے ملاقات بھی کرچکے تھے۔

ان کے بھائی حظیفہ اور سابق دوستوں نے کادق کی ہلاکت کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ وہ داعش کے خلاف امریکی اتحادیوں کے مبینہ فضائی حملے میں ہلاک ہوئے ہیں، اس فضائی کارروائی میں ان کے مکان کو شام کے علاقے المیادین میں نشانہ بنایا گیا تھا۔

ان کے بھائی نے کادق کی ہلاکت کا اعلان سماجی رابطے کی ویب سائٹ فیس بک پر کیا، کادق کے سابق دوست نے کہا کہ وہ اور اس کی بیٹی اور اہلیہ گذشتہ جمعے کو ہونے والے فضائی حملے میں زخمی ہوئے تھے لیکن بعد ازاں وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے بدھ کو ہلاک ہوگیا۔

سوشل میڈیا پر سرگرم اور حلب 24 کے چیف ایگزیکٹو محمد خالد، جو کادق کے سابق دوست بھی ہیں، کا کہنا تھا کہ ان کی اہلیہ کی حالت تشویش ناک ہے۔

سماجی رابطے کی مختلف ویب سائٹس پر یہ بھی رپورٹس گردش کررہی ہیں کہ مذکورہ فضائی حملے میں داعش کے ایک عالم بھی ہلاک ہوئے ہیں تاہم ان کی ہلاکت کے مقام کے حوالے سے متضاد اطلاعات سامنے آئی ہیں۔

دوسری جانب شام میں انسانی حقوق کے حوالے سے کام کرنے والے برطانوی مانیٹرنگ گروپ کا کہنا تھا کہ داعش کی اعلیٰ قیادت، جو ممکنہ طور پر مشرق وسطیٰ سے تعلق رکھتی تھی، گذشتہ 48 گھنٹو ں میں ہونے والی فضائی کارروائی میں ہلاک ہوئی تاہم گروپ نے یہ تصدیق نہیں کی کہ ان میں ال بن علی بھی تھے۔

خیال رہے کہ اگر ال بن علی کی ہلاکت کی تصدیق ہوجاتی ہے تو یہ داعش کے لیے بہت بڑا دھچکا ہوسکتی ہے، ال بن علی داعش کی اس قیادت کا حصہ تھے جنھیں لیبیا میں قید کیا گیا تھا۔

ادھر ان ہلاکتوں پر امریکی اتحادیوں نے کسی قسم کا فوری رد عمل ظاہر نہیں کیا تاہم انھوں نے گذشتہ ہفتے بتایا تھا کہ 25 اور 26 مئی کو مختلف فضائی کارروائیوں کے دوران داعش کے میڈیا انفرا اسٹکچر اور پروپیگنڈا سہولت کو نشانہ بنایا گیا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ اس قسم کی سہولیات پر حملوں سے گروپ کی صلاحیتوں اور دیگر ممالک میں حملوں میں کمی آئے گی۔

SHARE

LEAVE A REPLY