وزیراعلیٰ سندھ کی نااہلی کے خلاف سپریم کورٹ میں درخواست دائر کردی گئی ہے، درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ مراد علی شاہ جھوٹا حلف نامہ دائر کرکے رکن صوبائی اسمبلی منتخب ہوئے،آئین کے آرٹیکل باسٹھ اور تریسٹھ کے مطابق صادق اور امین نہیں رہے

تفصیلات کے مطابق شہری محمود اختر نقوی کی جانب سے عدالت عظمیٰ میں دائر درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ مراد علی شاہ دوہری شہریت کیس میں 2 مئی 2013 کو نا اہل قرار دیئے گئے تھے، سپریم کورٹ کی جانب سے مراد علی شاہ کو تمام مراعات اور تنخواہیں واپس کرنے کا حکم دیا تھا، جس پر تاحال عملدرآمد نہیں کیا گیا، مراد علی شاہ نے جھوٹے حلف نامے پر پی ایس 73 جامشورو سے ضمنی انتخاب میں حصہ لیا اور کامیابی حاصل کی۔

درخواست میں موقف اختیار کیا گیا کہ صوبائی الیکشن کمیشن نے عدالتی حکم کیخلاف مراد علی شاہ کی کامیابی کا نوٹیفیکیشن جاری کیا، مراد علی شاہ کو ملی بھگت کر کے ضمنی انتخاب میں کامیاب کرایا گیا۔ لہذا عدالت اس کا نوٹس لیتے ہوئے مراد علی شاہ کو وزیراعلیٰ سندھ کے عہدے سے ہٹانے، حاصل کردہ تنخواہیں، مراعات 15 روز میں واپس کرنے کا حکم دیا جائے، جبکہ مراد علی شاہ سے متعلق صوبائی الیکشن کمیشن سے تمام تفصیلات بھی طلب کی جائیں۔

SHARE

LEAVE A REPLY