مولانا فضل الرحمان نے موجودہ صورت حال میں ایم ایم اے کو فعال کرنے کا ارادہ ظاہر کیا ہے اور متعلقہ جماعتوں سے رابطوں کی بات کی ہے

انہوں نے کہا کہ عدالت سے انصاف کی توقع رکھتےہیں تحریک انصاف کی نہیں، پاناما کا کرپشن سے تعلق نہیں ، یہ ملک کو عدم استحکام سے دوچار کرنے کے لیے ا ستعمال ہورہا ہے ۔گزشتہ چار سال میں کرپشن کا کوئی اسکینڈل سامنے نہیں آیا۔

کراچی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے جمعیت علماء اسلام ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ جمہوریت کے خلاف بعض قوتیں سرگرم ہیں جمہوریت مخالف قوتوں کی حوصلہ افزائی درست نہیں۔
ان کا کہنا تھا کہ بھارت اور امریکا نے ہاتھ ملالیے ہیں اور ان کا ہدف چین اور پاکستان ہیں۔انہوں نے کہا کہ سیاسی کشمکش سے کسی اور کو کھیلنےکا موقع ملے گا، سیاستدانوں کو کچھ حاصل نہیں ہوگا۔
ان کا مزیدکہنا تھا کہ اسٹیبلشمنٹ کوکسی قیمت پر فریق نہیں بنانا چاہیے، فوج اور قوم کو ایک پیج پر رہنا چاہیے، فوجیں قوم کی پشت پناہی سے لڑتی ہیں ۔

جے یو آئی ف کے سربراہ کا کہنا تھا کہ جو حکومت میں ہوتا ہے اسی کو ہدف بنایا جاتا ہے ۔انہوں نے ماضی کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ زرداری صاحب اور یوسف رضا گیلانی پر ان کے دور میں کیس ہوئے ، آج سب ختم ہوگیا۔

SHARE

LEAVE A REPLY