جے آئی ٹی رپورٹ پرسماعت آج دوبارہ ہو رہی ہے

0
47

پاناما پیپرز سے متعلق جے آئی ٹی رپورٹ پر سپریم کورٹ میں پہلی سماعت گزشتہ روز ہوئی تھی جو آج منگل کو دوبارہ ہو رہی ہے

گزشتہ روز شریف فیملی کی جانب سے رپورٹ پر اعتراضات جمع کرادیئے گئے۔

شریف فیملی کے وکیل خواجہ حارث کی جانب اعتراضات میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ جے آئی ٹی رپورٹ کے جلد 10کو خفیہ رکھنا بدنیتی ہے، جےآئی ٹی نےاختیارات کا غلط استعمال کیا۔ درخواست میں غیر شفاف تحقیقات کو کالعدم قرار دینے اور جے آئی ٹی رپورٹ کی جلد 10کی کاپی فراہم کرنے کی استدعا کی گئی ہے۔

پی ٹی آئی کے وکیل نعیم بخاری نے عدالت سے استدعاکی ہے کہ وزیراعظم پر جرح کرنی ہے،عدالت طلب کیا جائے۔

نعیم بخاری کا موقف تھا کہ عدالت نےفیصلے میں کہا تھا بوقت ضرورت نواز شریف کو بلا سکتے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ تمام رقم اور فنڈز نواز شریف کے تھے، حسین نواز کے پاس آمدن کے ذرائع نہیں تھے۔
جسٹس شیخ عظمت سعید نے استفسار کیا کہ آپ کے مطابق ہل میٹل کا فائدہ نواز شریف کو مل رہا تھا؟

یپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ شریف خاندان قانون کی حکمرانی تسلیم نہیں کرے گا تو ہمارے پاس آپشنز ہیں، ہم قومی اسمبلی سے استعفوں سمیت تمام آپشن رکھنا چاہیں گے،جکومت نے عدالتی فیصلہ نہ مانا تو سڑکوں پر نکلیں گے۔

اسلام آباد پریس کلب میں میڈیا سے گفتگو میں بلاول بھٹو نے کہا کہ وزیراعظم استعفیٰ دے کر سازشوں کے نظرئیے کا خاتمہ کردیں،ان کے جانے سے جمہوریت کو کوئی خطرہ نہیں ہوگا۔
ان کا مزید کہناتھاکہ وزیر اعظم کا استعفا ملک وقوم اورجمہوریت کے مفاد میں ہے،سازش ہو رہی ہے تو حکومت بتائے کیا سازش ہو رہی ہے،پیپلزپارٹی کا ماضی میں بھی احتساب ہوا مزید کرنا ہے تو میں تیارہوں۔

پی پی چیئرمین نے کہا کہ جے آئی ٹی رپورٹ کے بعد نوازشریف اخلاقی اور قانونی جواز کھوچکے ہیں،امید ہے جلد ہی مولانا فضل الرحمٰن سمیت چند لوگ وزیراعظم کا ساتھ چھوڑ دیں گے۔
بلاول بھٹو نے مزید کہا کہ 17 جولائی کوشہیدہونیوالےکارکنوں کوخراج عقیدت پیش کرنےآیاہوں،12مئی ہو یا 17 جولائی، سب سےزیادہ قربانیاں پیپلزپارٹی نے دی ہیں،آصف زرداری نےبغیرکسی جرم کے 11 سال جیل میں گزارے۔

SHARE

LEAVE A REPLY