برہان انٹرچینج ۔ پولیس کا کارکنوں کو منتشر کرنے کے لیے آنسو گیس کا استعمال

0
231

وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا کی قیادت میں ہارون آباد پل سے رکاوٹوں کو ہٹاکر اسلام آباد کی طرف مارچ کرنے والے پاکستان تحریک انصاف کے کارکنان اور پولیس برہان انٹرچینج پر آمنے سامنے آگئے جہاں پولیس نے کارکنوں کو منتشر کرنے کے لیے آنسو گیس کا استعمال کیا۔

ڈان نیوز کے مطابق پولیس نے کارکنان پر آنسو گیس کی شیلنگ کی جس کے بعد تحریک انصاف کے کارکنان پیچھے ہٹے اور پولیس نے آنسو گیس کی شیلنگ بھی روک دی جبکہ آئی جی پنجاب اور سی سی پی او راولپنڈی بھی موقع پر پہنچ گئے۔

ڈان نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے پرویز خٹک نے کہا کہ ‘مجھے اپنے ملک پر فخر ہے اور اپنے ملک کو آزاد کرنے نکلے ہیں، میں کور کمیٹی کا رکن ہوں اور ہر صورت میں اسلام آباد پہنچوں گا’۔

ان کا کہنا تھا کہ ‘یہ ملک ہمارا ہے ہمیں کہیں بھی جانے کا حق ہے لیکن انھوں نے ہمارے سامنے رکاوٹیں کھڑی کی ہیں’۔

پرویز خٹک نے پیچھے ہٹنے سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ ‘میں تو اس صورت حال سے لطف اندوز ہورہا ہوں یہ مجھے روک نہیں سکتے’۔

انھوں نے کہا کہ ‘حکمرانوں نے ملک کو لوٹا ہے اور اب ملک کو مذاق بنایا ہے’۔

وزیر اعلیٰ کے پی نے کہا کہ ‘ہم نہتے ہیں لیکن ان کے پاس تمام ہتھیار ہیں اور ہم پر آنسو گیس کی شیلنگ کی جارہی ہیں’۔

وزیر اعلی خیبرپختونخوا کی سربراہی میں پاکستان تحریک انصاف کے کارکنان نے پولیس کے ساتھ کشمکش کے بعد ہارون آباد پل پر کھڑی کی گئی تمام رکاوٹوں کو ہٹا کر اسلام آباد کی جانب پیش قدمی شروع کردی۔

پولیس اور ایف سی اہلکاروں نے صوابی انٹرچینج کے قریب ہارون آباد پل پر وزیر اعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک کی قیادت میں اسلام آباد آنے والے پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے کارکنوں کو منتشر کرنے کے لیے آنسو گیس کی شیلنگ کی اور ربڑ کی گولیاں بھی برسائیں۔

پی ٹی آئی نے 2 نومبر کو اسلام آباد کو لاک ڈاؤن کرنے کا اعلان کیا ہے اور پی ٹی آئی خیبر پختوا کے کارکنان وزیراعلیٰ کی قیادت میں احتجاج میں شامل ہونے کے لیے اسلام آباد کی جانب رواں دواں ہیں۔

پی ٹی آئی کے 5 ہزار کے قریب لاٹھی بردار کارکنان نے صوابی انٹرچینج پر پولیس کی جانب سے لگائی گئی رکاوٹوں کو کرین کی مدد سے ہٹانے کی کوشش کی تو قانون نافذ کرنے والے اداروں نے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے آنسو گیس کی شیلنگ کی اور ربڑ کی گولیاں بھی برسائیں

SHARE

LEAVE A REPLY