بنگلہ دیش. دریا میں مسافر کشتی الٹنے کے نتیجے میں 13 افراد ہلاک

0
161

ڈھاکہ: بنگلہ دیش کے جنوبی حصے سے گزرنے والے دریا میں مسافر کشتی الٹنے کے نتیجے میں 13 افراد ہلاک اور درجنوں لاپتہ ہوگئے۔

خیر ملکی خبر رساں ادارے اے ایف پی کی ایک رپورٹ کے مطابق ضلع باریسال کے مقام پر دریا میں ہونے والے حادثے میں متعدد افراد نے اپنی مدد آپ کے تحت جان بچائی۔

ضلع کے پولیس چیف محمد اختر الزماں کے مطابق کشتی میں تقریبا 70 سے 80 کے درمیان افراد سوار تھے۔

ان کا کہنا تھا کہ ‘اب تک ہم نے دریا سے 13 افراد کی لاشیں نکالی ہیں جن میں بچے اور خواتین بھی شامل ہیں جبکہ متعدد افراد اب بھی لاپتہ ہیں’۔

پولیس افسر کا کہنا تھا کہ مذکورہ کشتی کے ڈرائیور کی نشاندہی پر متاثرہ کشتی کو کھینچ کر کنارے پر لایا گیا۔

انھوں نے کہا کہ جس وقت کشتی کو حادثہ پیش آیا اس وقت ایک اور کشتی اس کے قریب سے گزر رہی تھی جس نے لوگوں کو دریا سے نکالنے میں مدد فراہم کی۔

خیال رہے کہ بنگلہ دیش میں یومیہ ہزاروں کی تعداد میں لوگ کشتی کے ذریعے سفر کرتے ہیں اور مذکورہ کشتیوں کی خستہ حالی کے باعث ہر سال سیکٹروں لوگ ڈوب کر ہلاک ہوجاتے ہیں۔

گذشتہ سال فروری میں بنگلہ دیش کے وسطی علاقے میں کشتی کو پیش آنے والے حادثے میں 69 افراد ہلاک ہوگئے تھے اور اس واقعے کے دو ہفتے بعد ایک اور مسافر کشتی میں گنجائش سے زیادہ مسافر سوار کرنے کی وجہ سے مذکورہ کشتی دریا میں الٹ گئی تھی جس کے نتیجے میں 5 افراد ہلاک ہوگئے تھے۔

16 مئی 2014 کو بنگلہ دیش کے دار الحکومت ڈھاکہ کے قریب دریا میں کشی ڈوبنے سے 200 سے زائد افراد ڈوب گئے تھے جن میں سے درجنوں ہلاک ہوئے تھے۔

یاد رہے ضلع منشیگنج میں میگھنا دریا پر مارچ 2012 میں دو سو مسافروں سے بھری کشتی ایک آئل بارج سے ٹکرا گئی تھی جس کے نتیجے میں 150 افراد ہلاک ہو گئے تھے

SHARE

LEAVE A REPLY