اشتعال انگیز تقریر کیس میں سہولت کاری کے مقدمے میں انسداد دہشت گردی کی عدالت نے میئر کراچی وسیم اختر کی ضمانت منظور کرلی جبکہ بانی ایم کیو ایم، فاروق ستار،خالد مقبول سمیت 22ملزمان کے ایک بار پھرناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کر دیئے۔

انسداد دہشت گردی عدالت میں اشتعال انگیز تقریر میں سہولت کاری کیس کی سماعت ہوئی۔ وسیم اختر کو جیل سے لایا گیا ۔ روف صدیقی اور خواجہ اظہار الحسن بھی عدالت میں موجود تھے ۔ روف صدیقی کے وکیل نے عدالت سے کہا کہ ایک ہی جیسے الزام میں کئی مقدمات بنا دئیے گئے ہیں۔

عدالت نے وسیم اختر کی 25 ہزار روپے کی ضمانت منظور کرتے ہوئے روف صدیقی اور خواجہ اظہارکی ضمانت میں یکم دسمبر تک توسیع کر دی ۔

دوسری جانب عدالت نے اشتعال انگیز تقریر میں سہولت کاری کے دو مقدمات میں بانی ایم کیو ایم، فاروق ستار،حیدر عباس رضوی سمیت 22 ملزمان کے ایک بار پھر ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کر دئیے ۔

وسیم اختر پر 39 مقدمات درج تھے جس میں سے اب تک وہ38 مقدمات میں ضمانت پر ہیں، علاج معالجے کیس کا فیصلہ بدھ16نومبرکو سنایا جائے گا ۔

انسداد دہشت گردی عدالت میں اشتعال انگیز تقریر میں سہولت کاری دو مقدمات کی سماعت بھی ہوئی ۔ مفرور ملزمان کی عدم پیشی پر عدالت نے سماعت 19 نومبر تک ملتوی کر دی ۔

SHARE

LEAVE A REPLY