شام میں کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کو نظر انداز نہیں کیا جا سکتا: جواد ظریف

0
258

ایرانی وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے کہا ہے کہ شام میں کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کو نظر انداز نہیں کیا جا سکتا ہے۔
جواد ظریف نے اتوار کے روز جرمنی کے شہر میونخ میں منعقدہ سکیورٹی کانفرنس میں اپنی تقریر میں کہا کہ ”کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کو کبھی نظر انداز نہیں کیا جا سکتا ہے ۔بدقسمتی سے داعش اور النصرہ ایسی دہشت گرد تنظیموں کے پاس اب بھی کیمیائی ہتھیار موجود ہیں”۔

ایران کے اتحادی شام نے اسی ہفتے انسانی حقوق کی عالمی تنظیم ہیومن رائٹس واچ کی اس رپورٹ کو مسترد کردیا ہے جس میں کہا گیا تھا کہ اس کی فوج اور اتحادی فورسز نے شمالی شہر حلب پر دوبارہ قبضے کے لیے لڑائی کے دوران میں کیمیائی ہتھیار استعمال کیے تھے۔اس نے اس کے بجائے حکومت مخالف جنگجوؤں پر کیمیائی ہتھیار استعمال کرنے کا الزام عاید کیا تھا۔

امریکا نے گذشتہ ماہ شام کے اٹھارہ سینیر عہدہ داروں کو ملک کے وسیع پیمانے پر تباہی پھیلانے والے ہتھیاروں کے پروگرام سے تعلق کے الزام میں بلیک لسٹ کردیا تھا۔امریکا نے یہ فیصلہ ایک بین الاقوامی تحقیقاتی رپورٹ منظرعام پر آنے کے بعد کیا تھا۔اس میں شامی حکومت کی فوجوں کو شہریوں کے خلاف کلورین گیس کے حملوں کا ذمے دار قرار دیا گیا تھا۔

SHARE

LEAVE A REPLY