یہ وہ عباس ہے دریا کو جو سیراب کرتا ہے۔نگہت نسیم

0
267

لُغت میں ہم وفا کی آپکو احساس لکھیں گے
سکینہ کے لیئے پانی کی زندہ آس لکھیں گے
کبھی بھی مرحلہ جب پیاس کا آ جائے گا نگہت
قلم کی نوک سے دریا پہ ہم عباس لکھیں گے
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
علی کا لال ہے وا جرآتوں کے باب کرتا ہے
وہ اپنی پیاس سے کشتِ وفا سیراب کرتا ہے
یہ وہ غازی ہے نگہت ناز جس پہ آلِ احمد کو
یہ وہ عباس ہے دریا کو جو سیراب کرتا ہے
ڈاکٹر نگہت نسیم سڈنی

SHARE

LEAVE A REPLY