سعودی عرب بمقابلہ قطر،اختلاف،نفرت اور عداوت میں فرق ہوتا ہے۔ صفدر ھمدانی

1
497

گزشتہ کچھ دنوں سے سعودی عرب اور قطر کے درمیان تعلقات میں سرد مہری اور رخنے کی خبریں آ رہی تھیں جنکی اب تصدیق ہو گئی ہے کہ سعودی عرب اور اسکے ہم خیال بلکہ ہم نوالہ وہم پیالہ ممالک نے قطر سے تعلقات منقطع کر لیئے ہیں۔ ان ممالک میں مصر،لیبیا،یو اے ای اور بحرین وغیرہ شامل ہیں

ریاض میں گزشتہ دنوں ہونے والی کانفرنس میں امریکی صدر ٹرمپ اوروالی سعودی عرب شاہ سلمان کے خطاب میں ایران کے خلاف کھلم کھلا محاذ قائم کرنے اور ایران پر دہشت گردوں کی حمایت کے الزامات لگانے کے بعد اس قضیے نے جنم لیا جس میں بظاہر قطر نے ایران مخالف محاذ میں شامل ہونے سے انکار کیا اور اس حکمت عملی سے اختلاف۔

ameer qatar and saudia
امیر قطر و سعودیہ

اب قطر سے تعلقات منقطع کرنے کے حوالے سے جوسعودی شاہی فرمان جاری ہوا ہے اسکے نکات پر غور کیجئے تو بہت واضع طور پر قطر کے خلاف سعودی عرب کی حد درجہ جھنجھلاہٹ نظر آتی ہے
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

سعودی عرب نے قطر کے ساتھ سفارتی تعلقات ختم کرنے کا اعلان کیا ہے اور خلیجی ریاست کے ساتھ اپنے زمینی، بحری اور فضائی رابطے بھی ختم کر لئے ہیں۔

سعودی عرب قطر سے ملنے والی اپنی زمینی، فضائی اور سمندری سرحد بند کر رہا ہے۔ نیز دوحہ کے جہازوں یا دیگر ذرائع مواصلات کو مملکت سعودیہ کی فضائی، زمینی اور سمندری حدود استعمال کرنے اور وہاں سے گزرنے کی اجازت نہیں ہو گی۔

سعودی عرب اپنے اس اعلان کے بعد ضروری قانونی اقدامات اٹھا رہا ہے اور دوسرے برادر ملکوں اور کمپنیوں سے بھی رابطہ کر رہا ہے تاکہ اس فیصلے پر فوری عمل درآمد کو یقینی بنایا جا سکے کیونکہ اس پر فوری عمل کرنا سعودی عرب کی سلامتی کے لئے انتہائی ضروری ہے

یمن جنگ میں مصروف سعودی اتحاد میں شامل قطر کے فوجی دستوں کو واپس بھیج دیا جائے گا۔

سعودی عرب نے دیگر اتحادی ممالک سے بھی قطر سے سفارتی تعلقات ختم کرنے کی اپیل کی

قطر کے شہری 2 ہفتوں میں سعودیہ چھوڑ دیں

قطر میں مقیم سعودی شہری 2 ہفتوں میں قطر چھوڑ دیں اور سعودیہ واپس ا جائیں

سعودی شہری کسی دوسرے ملک جاتے ہوئے بھی ٹرانزٹ مسافر کے طور پر بھی کوئی قطری ہوائی اڈہ استعمال نہیں کر سکیں گے

قطری سفارتکار 48 گھنٹوں میں سعودیہ سے نکل جائیں

یمن کے لئے عرب اتحاد نے قطر کی رکنیت ختم کر دی
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
یہ فقط چند اقدامات کا تزکرہ ہے۔ اب فیصلہ خود کیجئے کہ کیا مسلمانوں کو کسی بیرونی دشمن کی ضرورت ہے؟ یہ بھی سوچیں کہ اختلاف،نفرت اور عداوت میں فرق ہوتا ہے

صفدر نہیں ہے ہم کو ضرورت غنیم کی
اپنے گلے پہ اپنا ہی خنجر چلائیں گے

SHARE

1 COMMENT

  1. اکالم کے آخر میں شعر نے دریا کو کوزے میں بند کر دیا ۔ ہائے ۔۔۔۔۔افسوس ان مسلمانوں پر ۔۔۔جو صرف مسلمان ہیں انسان نہیں ۔۔

LEAVE A REPLY