وزیر خزانہ اسحاق ڈار اپنے خلاف نیب ریفرنس کی سماعت پر آج بھی عدالت میں پیش نہ ہوئے، وکیل کی جانب اسحاق ڈار کا میڈیکل سرٹیفکیٹ پیش کیاگیا اور اس بنا پر حاضری سے استثنا کی درخواست بھی دی گئی جس کے بعد عدالت نے درخواست پر فیصلہ محفوظ کر لیا۔
احتساب عدالت نے گزشتہ سماعت میں پیش نہ ہونے پر وزیر خزانہ اسحاق ڈار کے قابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کیے تھے جب کہ عدالت نے آج ان کے دونوں صاحبزادوں کو بھی طلب کررکھا ہے۔
اسلام آباد کی احتساب عدالت کے جج محمد بشیر اسحاق ڈار کے خلاف نیب ریفرنس کی سماعت کررہے ہیں تاہم وزیر خزانہ اور ان کے وکیل خواجہ حارث آج عدالت نہیں پہنچے ہیں اور ان کی معاون وکیل عائشہ حامد عدالت میں موجود ہیں۔
عائشہ حامد نے عدالت کو بتایا کہ اسحاق ڈار اور خواجہ حارث لندن میں موجود ہیں۔ نیب کی پراسیکیوشن ٹیم اور کیس کے 4 گواہان عدالت میں موجود ہیں جب کہ کیس کے کل 28 گواہان میں سے اب تک صرف 3 پر ہی جرح ہوسکی ہے۔
اسحاق ڈار کی عدم پیشی پر نیب حکام نے ان کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کرنے کی درخواست کی ہے۔
گزشتہ سماعت پر اسحاق ڈارکے وکیل خواجہ حارث کی جانب سے اسحاق ڈار کا میڈیکل سرٹیفکیٹ پیش کیاگیا تھا اور اس بنا پر حاضری سے استثنا کی درخواست کی گئی تھی تاہم عدالت نے استثنا دینے سے انکار کردیا تھا۔
خواجہ حارث نے بتایا تھا کہ اسحاق ڈار کی طبیعت ٹھیک نہیں اس لیے وہ لندن گئے ہیں، خواجہ حارث نے ان کا میڈیکل سرٹیفکیٹ بھی پیش کیا تھا تاہم نیب ٹیم نے اس پر اعتراض اٹھاتے ہوئے کہا تھا کہ اسحاق ڈار سیاسی سرگرمیوں کے لیے لندن میں موجود ہیں۔
واضح رہے کہ نیب نے پاناما کیس کے فیصلے کی روشنی میں اسحاق ڈار کے خلاف آمدن سے زائد اثاثوں کا ریفرنس دائر کیا ہے

SHARE

LEAVE A REPLY