ایران، پاک-چین راہداری منصوبے میں شمولیت کا خواہش مند

0
332

پاکستان میں تعینات ایرانی سفیر مہدی ہنر دوست کا کہنا ہے کہ ایران، پاک-چین اقتصادی راہداری منصوبے (سی پیک) میں کردار ادا کرنے کا خواہش مند ہے۔

اسلام آباد میں فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری (ایف پی سی سی آئی) کے دفتر کے دورے کے موقع پر ایرانی سفیر کا کہنا تھا کہ ‘ان کا ملک توانائی کی فراہمی اور سڑکوں، ریلوے اور ڈیمز کی تعمیر کے ذریعے پاکستانی معیشت کی ترقی میں مدد کرنے کی اہلیت رکھتا ہے’۔

مہدی ہنر دوست کا مزید کہنا تھا کہ ‘پاکستانی ٹیکسٹائل، چاول، طبی آلات، کھیلوں کے سامان اور زرعی مصنوعات کی ایران میں بہت مانگ ہے’۔

تاہم ایرانی سفیر نے تسلیم کیا کہ دونوں ممالک کے درمیان تجارت اور کاروبار، بینکاری کے چینلز کی کمی کی وجہ سے محدود ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ بینکاری کے مسائل کو حل کرنے سے دوطرفہ تجارت میں تیزی آئے گی۔

ایف پی سی سی آئی کے اسلام آباد دفتر کے پہلے دورے کے موقع پر ایرانی سفیر کا استقبال ایف پی سی سی آئی کے صدر عبدالرؤف عالم، نائب صدر ظفر بختاوری، اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹریز (آئی سی سی آئی) کے سابق صدور خالد جاوید، اعجاز عباسی اور ایف پی سی سی آئی کے چیئرمین کورآڈینیشن سمیت دیگر عہدیداران نے کیا۔

اس موقع پر مہدی ہنر دوست کا کہنا تھا کہ ‘ایرانی گیس پاکستان کے لیے توانائی کا سب سے سستا، تیز رفتار اور سب سے زیادہ قابل اعتماد ذریعہ ہے’۔

ان کا کہنا تھا کہ ‘اس منصوبے کو جلد از جلد شروع ہونا چاہیے اور جلد ہی ایران 2 ارب ڈالر کی لاگت سے اپنی طرف کی پائپ لائن کی تعمیر مکمل کرلے گا’۔

مہدی ہنر دوست نے اس تاثر کو مسترد کردیا کہ عالمی پابندیاں پاک-ایران گیس پائپ لائن منصوبے کو محدود کردیں گی، ساتھ ہی ان کا کہنا تھا کہ بہت سے ممالک مثلاً چین، ہندوستان، ترکی، جاپان اور جنوبی کوریا عالمی پابندیوں کے دوران اور بعد میں بھی ایران سے گیس خرید رہے ہیں۔

SHARE

LEAVE A REPLY