سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر کا کہناہے کہ ایران اور دہشت گردی خطے میں ایک ہی سکے کے دو رُخ ہیں۔

انھوں نے سعودی دار الحکومت ریاض میں عرب سربراہ اجلاس سے قبل وزرائے خارجہ کے ایک اجلاس میں کہا کہ ایران جب تک خطے میں مداخلت جاری رکھتا ہے تو اس کے ساتھ کوئی امن نہیں ہوسکتا۔

دہشت گردی سے سختی سے نمٹا جانا چاہیے اور اس کے مالی ذرائع کا خاتمہ کیا جانا چاہیے۔

انھوں نے بتایا کہ اس انتیسویں عرب سربراہ اجلاس کے ایجنڈے میں مسئلہ فلسطین سرفہرست ہوگا۔

انھوں نے واضح کیا کہ سعودی عرب نے امریکا کی جانب سے مقبوضہ القدس کو اسرائیل کا دارالحکومت قرار دینے کے اعلان پر افسوس کا اظہار کیا تھا۔

سعودی وزیر خارجہ نے اپنے اس موقف کا اعادہ کیا کہ حوثی ملیشیا یمن میں جاری بحران کی ذمے دار ہے۔

انھوں نے عراق کے حوالے سے کہا کہ سعودی عرب اس کی تعمیر نو میں مدد دے رہا ہے۔

SHARE

LEAVE A REPLY