نیب حکام نے کہا ہے کہ کیپٹن (ر) صفدر سزا یافتہ مجرم ہے،ان کو گرفتاری سے روکنے والوں کیخلاف کارروائی ہوگی ۔

ایون فیلڈ ریفرنس میں ایک سال کی سز ا پانے والے کیپٹن صفدر گرفتاری دینے کےلئے راولپنڈی پہنچے تھے ،ان کی ریلی دن بھر شہر کے مختلف علاقوں میں گشت کرتی رہی ۔

نیب حکام کے مطابق نیب ٹیم ڈپٹی ڈائریکٹر محبوب عالم کی سربراہی میں انہیں گرفتار کرنے کے لئے پہنچی تھی کہ ریلی میں موجود کارکنوں نے کیپٹن صفدر کو حصار میں لے لیا ۔

نیب حکام کے مطابق کیپٹن صفدر کی معاونت کرنے اور پناہ دینے والوں کی شناخت ویڈیوز کی مدد سے کی جائے گی ۔

کیپٹن صفدر نے کہا کہ وہ گرفتاری دینے کےلئے ہی آئے ہیں ،ریلی میں چوہدری تنویز ،ملک ابرار،شکیل اعوان سمیت مقامی پارٹی رہنما اور کارکنوں کی بڑی تعداد موجود ہے۔

کیپٹن صفدر کی گرفتاری کےلئے نیب ٹیم ان کے قریب تر پہنچ چکی ہے ،انہیں آج کسی بھی وقت گرفتار کرلیا جائےگا،اس وقت وہ کارکنوں کے حصار میں موجود ہیں،جس کی وجہ سے اب تک گرفتاری عمل نہیں آسکی ہے ۔

کیپٹن صفدر نے کہا کہ پارٹی قیادت کے فیصلے پر راولپنڈی گرفتاری دینے جارہا ہوں،آج عوام نے یہ فیصلہ کرنا ہے کہ ملک کو کیسا چلانا ہے۔

حکام کے مطابق نیب ٹیم کی سربراہی ڈپٹی ڈائریکٹر محبوب عالم کررہے ہیں ،اس وقت ان کے ہمراہ راولپنڈی پولیس کے اہلکار بھی موجود ہیں،کیپٹن صفدر کو گرفتار کرکے نیب آفس منتقل کیا جائےگا،جہاں سے انہیں کل احتساب عدالت کے روبرو پیش کیا جائےگا۔

حکام کے مطابق کیپٹن صفدر سزایافتہ شخص ہیں،انہیں پناہ دینے اور مدد دینے والوں کےخلاف بھی کارروائی کی جائے گا۔

یاد رہے کہ احتساب عدالت نے ایون فیلڈ ریفرنس میں کیپٹن (ر) صفدر کو ایک سال قید کی سزا کا حکم سنایا تھا جب کہ اسی ریفرنس میں سابق وزیراعظم نواز شریف کو 10 سال اور مریم نواز کو 7 سال قید کا حکم دیا گیا ہے۔

SHARE

LEAVE A REPLY