اقوام متحدہ کے مطابق میانمار کی فوج نے روہنگیا آبادی کے خلاف بین الاقوامی قانون کی نظر میں جن جرائم کا ارتکاب کیا ہے۔ اس عالمی ادارے کے تفتیشی مشن نے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ راکھین ریاست میں فوج نے ہزاروں روہنگیا مسلمانوں کو علاقہ چھوڑنے پرمجبور کیا اور یہ اقدامات جنگی جرائم اور نسل کشی کے زمرے میں آتے ہیں۔ اس آزاد کمیشن کے مطابق میانمار کی فوج کے پاس خواتین اور بچوں کے استحصال اوردیہات جلانے کی کوئی وجہ نہیں ہے۔ اس رپورٹ میں سلامتی کونسل سے میانمار کی اعلیٰ فوجی قیادت پر مقدمہ چلانے کی سفارش کی ہے۔

SHARE

LEAVE A REPLY