ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر فیصل کا کہنا ہے کہ امریکا سے بات چیت کا آغاز اچھی شروعات ہیں، بات چیت کچھ لینے اور کچھ دینے پر انحصار کرتی ہے، تاہم امریکی نمائندہ خصوصی برائے افغان مفاہمتی عمل زلمے خلیل زاد کے دورے کے دوران کوئی شرط نہیں رکھی گئی۔

دفتر خارجہ میں ہفتہ وار بریفنگ کے دوران ترجمان ڈاکٹر محمد فیصل کا کہنا تھا کہ زلمے خلیل زاد کی شاہ محمود قریشی سے بھی ملاقات ہوئی، جس کے دوران وزیر خارجہ نے تعاون کا یقین دلایا ہے، ان کا کہنا تھا کہ امریکا کے ساتھ کولیشن سپورٹ فنڈ پر بات شروع ہوئی ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا تھا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے وزیراعظم عمران خان کو لکھے گئے خط میں اس بات پر زور دیا کہ خطے میں اہم ترجیح افغانستان میں قیام امن ہے۔

ڈاکٹر محمد فیصل نے طالبان وفد کی پاکستان آمد سے متعلق لاعلمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ افغانستان مسئلے کا حل سیاسی ہے فوجی نہیں، پاکستان افغانستان میں مفاہمتی عمل بڑھانے پر یقین رکھتا ہے۔

SHARE

LEAVE A REPLY