پاکستان کے 28 ویں وزیراعظم کا فیصلہ آج قومی اسمبلی کے اجلاس میں ہو گا، ن لیگ کے شاہد خاقان عباسی اور اپوزیشن کے پانچ امیدوار میدان میں ہیں۔ چھ امیدواروں کے کاغذات نامزدگی منظور کر لیے گئے۔

پارلیمنٹ میں سیاسی گہما گہمی عروج پر ہے، سب نظریں قومی اسمبلی پر لگ گئیں، قومی اسمبلی میں آج سہ پہر تین بجے وزیر اعظم کا انتخاب ہو گا۔ قومی اسمبلی میں ن لیگ اور اتحادیوں کو واضح اکثریت حاصل ہے، 223 ارکان کی حمایت سے شاہدخاقان کا وزیراعظم منتخب ہونا یقینی ہے، تمام اپوزیشن جماعتیں مل کر بھی کسی امیدوار کو کامیاب کرانے کی پوزیشن میں نہیں ہیں۔

شاہد خاقان عباسی کے خلاف تحریک انصاف اور شیخ رشید کا ایل این جی ٹھیکوں سے متعلق ریفرنس مسترد کر دیا گیا۔ وزارت عظمیٰ کے لیے شاہد خاقان عباسی مسلم لیگ ن کی طرف سے امیدوار ہیں۔

اپوزیشن کی جانب سے سربراہ عوامی مسلم لیگ شیخ رشید پاکستان تحریک انصاف اور ق لیگ، خورشید شاہ اور نوید قمر پیپلز پارٹی، کشور زہرہ ایم کیو ایم پاکستان اور صاحبزادہ طارق اللہ جماعت اسلامی کے امیدوار ہیں۔

سپیکر قومی اسمبلی نے جانچ پڑتال کے بعد تمام امیدواروں کے کاغذات نامزدگی منظور کر لیے۔ سپیکر ایاز صادق نے کہا کہ شاہد خاقان عباسی کے خلاف ریفرنس الیکشن کمیشن میں دائر کیا جائے۔ قانون کے مطابق یہ ریفرنس سپیکر کے پاس جمع نہیں ہو سکتا۔

خیال رہے وزیر اعظم کا انتخاب ایوان کی تقسیم اور اوپن بیلیٹنگ کے طریقہ کار کے تحت ہوگا۔ ایوان میں مختلف لابیز بنائی جائیں گی اور حامی اراکین قطار میں نام درج کرواتے ہوئے اپنے امیدوار کی لابی میں چلے جائیں گے، ووٹوں کی گنتی کے بعد ایوان کی گھنٹیاں پھر سے بجیں گی، اجلاس کی کارروائی دوبارہ شروع ہونے پر وزارت عظمی کے لیے کامیاب امیدوار کے نام کا اعلان کر دیا جائے گا۔

SHARE

LEAVE A REPLY