سپریم کورٹ آف پاکستان کے جسٹس اعجاز الاحسن کے گھر پر فائرنگ کے واقعے کی ابتدائی تحقیقاتی رپورٹ جاری کردی گئی۔

پولیس کے ایس پی آپریشنز ماڈل ٹاؤن کی جانب سے جاری کردہ اس رپورٹ میں بتایا گیا کہ فائرنگ کے واقعے کی اطلاع 10 بج کر 45 منٹ پر پاکستان رینجرز کے شفٹ انچارج نائیک عبدالرزاق کی جانب سے دی گئی۔

رپورٹ میں بتایا گیا کہ ایک گولی جسٹس اعجاز الاحسن کے گھر کے دروازے پر بالائی حصے میں لگی اور اس کا زاویہ پیرا بولک انداز میں تھا۔

پولیس رپورٹ کے مطابق واقعے کے فوری بعد پنجاب فارنزک سائنس ایجنسی کے کرائم یونٹ کو تجزیے کے لیے بلایا گیا اور انہوں نے جائے وقوع سے چلی ہوئی گولی، تصاویر اور دیگر شواہد اکھٹے کیے۔

ابتدائی تحقیقات کے بعد یہ معلوم ہوا کہ جسٹس اعجازالاحسن کے گھر کے دروازے پر لگنے والی گولی کچھ فاصلے سے فائر کی گئی۔

اس حوالے سے پولیس کی جانب سے تحقیقات کا آغاز کردیا گیا ہے کہ گولی کس سمت سے آئی جبکہ پنجاب فارنزک سائنس ایجنسی کی تفصیلی رپورٹ جلد سامنے آنے کا امکان ہے، جس کے بعد واقعے سے متعلق مزید تفیصلات سامنے آسکیں گی۔

SHARE

LEAVE A REPLY