نوازشریف کی درخواست پر فیصلہ محفوظ

0
35

اسلام آباد کی احتساب عدالت نے سابق وزیر اعظم اور پاکستان مسلم لیگ (ن) کے تا حیات قائد نواز شریف کی جانب سے ایون فیلڈ ریفرنس کا فیصلہ 7 روز تک مؤخر کرنے کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کرتے ہوئے سماعت کچھ دیر کے لیے ملتوی کردی۔

اسلام آباد کی احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے نواز شریف کی فیصلہ 7 روز تک مؤخر کرنے کی درخواست پر سماعت کی اور وکلاء کے دلائل مکمل ہونے کے بعد فیصلہ محفوظ کرلیا۔

اس سے قبل اسلام آباد کی احتساب عدالت کی جانب سے اعلان کیا گیا تھا کہ نواز شریف، ان کی صاحبزادی مریم نواز اور داماد کیپٹن (ر) صفدر کے خلاف قومی احتساب بیورو (نیب) کی جانب سے دائر ایون فیلڈ ریفرنس کا فیصلہ آج (بروز جمعہ) سنایا جائے گا۔

احتساب عدالت کے جج محمد بشیر کی جانب سے 3 جولائی کو فیصلہ محفوظ کیا تھا اور اسے سنانے کے لیے 6 جولائی کی تاریخ مقرر کی تھی۔

یاد رہے کہ سابق وزیر اعظم نواز شریف اور مریم نواز کی جانب سے احتساب عدالت میں ایک درخواست بھی دائر کی گئی تھی، جس میں اس فیصلے کو چند روز کے لیے مؤخر کرنے کی استدعا کی گئی ہے۔

نواز شریف اور مریم نواز کی جانب سے دائر درخواست میں موقف اختیار کیا تھا کہ بیگم کلثوم نواز کی طبیعت کی ناسازی کے باعث وہ فیصلے کے موقع پر عدالت میں پیش نہیں ہوسکتے لہٰذا چند روز کے لیے اس فیصلے کو مؤخر کیا جائے۔

واضح رہے کہ ایون فیلڈ ریفرنس میں سابق وزیر اعظم نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مجموعی طور پر 100 سے زائد پیشیاں بھگت چکے ہیں جبکہ 9 ماہ سے زائد اس کیس کی سماعت جاری رہی۔

ادھر ایون فیلڈ ریفرنس کے متوقع فیصلے کے موقع پر احتساب عدالت کے اطراف سخت سیکیورٹی کے انتظامات کیے گئے تھے اور کسی بھی غیر متعلقہ شخص کو عدالت میں آنے کی اجازت نہیں تھی جبکہ شہری انتظامیہ نے اسلام آباد میں دفعہ 144 بھی نافذ کر رکھی تھی۔

احتساب عدالت کے اطراف اور اندر سخت سیکیورٹی کے لیے رینجرز اور کمانڈوز بھی تعینات کیے گئے تھے جبکہ اس دوران صحافیوں کو بھی کمرہ عدالت میں جانے کی اجازت نہیں دی گئی تھی۔

SHARE

LEAVE A REPLY