پاکستان تحریک انصاف کے ترجمان نعیم الحق نے واضح طور پر اعلان کردیا کہ کسی عدالت نے دھرنے سے نہیں روکا لہٰذا 2 نومبر کو ہر صورت میں دھرنا ہوگا اس حوالے سے پلان تبدیل نہیں ہوگا۔

نعیم الحق نے سپریم کورٹ کے باہر میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ’ہمارا دھرنا ہوگا اور اس میں لاکھوں لوگ آئیں گے‘۔

انہوں نے کہا کہ ’پاکستان کی کسی عدالت نے ہمیں ابھی تک احتجاج کا حق استعمال کرنے سے نہیں روکا، ہم پر کوئی قید و بندش نہیں ہے، ہم ہمیشہ پر امن رہے ہیں‘۔

نعیم الحق نے کہا کہ ’جس لاک ڈاؤن کی ہم نے بات کی تھی وہ اسلام آباد میں ہوچکا ہے، حکومت نے خواتین پر ظلم کیا، ورکرز کو بلا وجہ گرفتار کیا ، جگہ جگہ رکاوٹیں لگادی ہیں‘۔

ان کا کہنا تھا کہ ’وزیر اعظم نواز شریف جھوٹ بولنے میں مہارت رکھتے ہیں، وہ پھر سپریم کورٹ سے جھوٹ بولنے کی کوشش کریں گے‘۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں خوشی ہے کہ جس کمیشن کا قیام ہونے جارہا ہے یہ بات کی تہہ تک پہنچ جائے گا اور سپریم کورٹ نے کہا ہے کہ وہ جلد از جلد اس کمیشن کا قیام عمل میں لائے گی اور جلد از جلد اس کی کارروائی شروع کریں گے۔

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ اس کا یہ مطلب نہیں کہ ہم کرپشن کے خلاف اپنی جدوجہد کو روک دیں، ہم اس جدوجہد کو جاری رکھیں گے اور آگے بڑھائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ ’نواز شریف کی صورت میں ایک اور شیخ مجیب الرحمٰن پیدا ہوگیا ہے جنہوں نے خیبر پختونخوا کو مکمل طور پر پنجاب سے علیحدہ کردیا‘۔

خیبر پختونخوا کے کارکنوں کو پنجاب میں داخل نہ ہونے دینے کے حوالے سے نعیم الحق نے کہا کہ یہ ملکی یکجہتی اور قومیت پر ضرب ہے اور اس سے جو نفرتیں پھیلیں گی اس کی ساری ذمہ داری نواز شریف پر ہوگی۔

انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کا دھرنا کرپشن کے خلاف ہے اور پاناما لیکس مجموعی قومی کرپشن کا ایک چھوٹا سا حصہ ہے، یہاں پورا نظام کرپشن سے بھرپور ہے۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان کی 20 سالہ جدوجہد کا مقصد یہ ہے کہ ملک سے کرپشن کا اس طرح خاتمہ کیا جائے گا وہ دوبارہ سر نہ اٹھاسکے ورنہ پاکستان آگے نہیں بڑھ سکتا۔

SHARE

LEAVE A REPLY