گذشتہ روز پارلیمنٹ کے باہر پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما مراد سعید اور مسلم لیگ (ن) کے رہنما جاوید لطیف کے درمیان ہونے والے جھگڑے کے بعد پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان نے اپنے پارٹی رہنماؤں اور کارکنوں کو جاوید لطیف کا سوشل بائیکاٹ کرنے کی ہدایت کردی۔

پی ٹی آئی چیئرمین نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں کہا، ‘پارٹی کا کوئی بھی رہنما یا کارکن اس ٹی وی شو میں شرکت نہ کرے جس میں جاوید لطیف کو مدعو کیا گیا ہو’۔

پی ٹی آئی چیئرمین کا یہ بیان ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب گذشتہ روز لیگی رکن اسمبلی جاوید لطیف کی جانب سے قومی اسمبلی میں پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان کو ‘غدار’ کہنے پر دونوں جماعتوں کے رہنماؤں کے درمیان تلخ کلامی ہوئی اور نوبت ہاتھا پائی تک پہنچ گئی۔

مسلم لیگ (ن) کے رکن اسمبلی میاں جاوید لطیف نے قومی اسمبلی میں اپنے خطاب میں تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کو پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کا فائنل کھیلنے والے غیرملکی کھلاڑیوں کو ‘پھٹیچر’ کہنے پر تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے انہیں ‘غدار’ قرار دیا۔

میاں جاوید لطیف نے اپنے خطاب میں کہا کہ پی ایس ایل کے ذریعے انٹرنیشنل کرکٹ پاکستان میں آرہی ہے، مگر عمران خان کرکٹرز کو تنقید کا نشانہ بنا کر ملک سے غداری کا ثبوت دے رہے ہیں۔

انھوں نے پی ٹی آئی ارکان اسمبلی کو مخاطب ہوتے ہوئے کہا کہ’وہ اپنے پارٹی چیئرمین کو تمیز سکھائیں‘۔

میاں جاوید لطیف کے خطاب کے دوران ہی تحریک انصاف کے ارکان نے احتجاج شروع کردیا، جس پر ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی مرتضیٰ جاوید عباسی نے پی ٹی آئی ارکان کو کہا کہ وہ خاموش ہوجائیں، انہیں بھی موقع دیا جائے گا۔

SHARE

LEAVE A REPLY