مصر نے انسانی بنيادوں پر امداد کی غرض سے رفاہ پر واقع سرحدی گزر گاہ تين روز کے ليے کھول دی ہے۔ اس پيش رفت کے نتيجے ميں مصر اور ديگر ملکوں ميں پھنسے ہوئے ہزاروں فلسطينی غزہ واپس جا سکيں گے۔ ان ميں بہت سے طلباء اور بيمار افراد شامل ہيں۔

حکام کے مطابق غزہ ميں بھی تقريباً بيس ہزار افراد ايسے ہيں، جنہيں طبی و ديگر وجوہات کی بناء پر کسی دوسرے مقام تک سفر کرنے کی اشد ضرورت ہے ليکن سرحدی گزر گاہ صرف غزہ جانے کے ليے کھولی گئی ہے۔ غزہ کے شہريوں کے ليے رفاہ بارڈر کراسنگ وہ واحد مقام ہے، جہاں کا انتظام اسرائيل کے ہاتھوں ميں نہيں تاہم حماس اور قاہرہ کے مابين کشيدگی کے سبب يہ کراسنگ بھی عموماً بند رہتی ہے۔

SHARE

LEAVE A REPLY