علی ابن الحسین زین العابدین نے فرمایا۔۔تیسراحصہ،نگہت نسیم

0
200

خطبہ امام زین العابدین کا تیسرا حصہ

جب طویل مسافت کے بعد اسیران کربلا شام پہنچے تو انہیں دربار یزید میں پیش کیا گیا ۔ امام سید الساجدین زین العابدین نے یزید ملعون کے دربار میں اہل شام اور درباریوں سے خطاب کیا۔ اسی خطبہ کے آغاز میں اللہ سبحانہ تعالی کی تعریف کی پھر نسبت رسول پاک کی فضیلیت بیان فرمائی ۔۔۔۔۔۔ پھر انہوں نے اپنا تعارف بیان کیا ۔۔۔ان کا تعارف اُن کے عزم و ہمت ، نسب کی پاکبازی اور افضل ترین شجرہ کی عکاسی کرتا ہے ۔

تمام جہانوں میں آج تک کسی نے اپنا تعارف یوں نہ کرایا ہو گا جیسا کہ امام سجاد ع نے کرایا اور دربارِ یزید میں موجود تمام لوگوں سمیت رہتی دنیا تک مخلوقِ خدا کو یہ باور کرا دیا کہ حسب و نسب میں کو ئی بھول کر بھی ان سے مقابلہ کرنے کی جسارت نا کرے ۔

دنیا کی تاریخ میں ایک تعارف امیرالمومنین علی ابنِ ابی طالب علیہ السلام نے جنگِ خیبر کے موقع پر اپنا کراویا تھا اور اس دن یزید بن معاویہ کے دربار میں حضرت امام زینُ العابدین سید الساجدین علیہ السلام نے اپنے جد کی سنت ادا کرتے ہوئے یوں کروایا ۔
( جاری ہے )

ڈاکٹر نگہت نسیم

(مضمون کی تیاری کے لئے نیٹ کے مضامین اور نہج البلاغہ سے مدد لی گئی
خصوصاً بیانِ خطبہ از ناسخ التواریخ ج ۲ صفحہ 167 ، طبع جدید زندگی حضرت سید الشہداء)

SHARE

LEAVE A REPLY