سندھ کے سابق گورنر ڈاکٹر عشرت العباد کا پی ایس پی اور ایم کیوایم پاکستان کے اتحاد کے حوالے سے اپنے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہنا ہے کہ دونوں جماعتوں میں کسی سے بھی رابطے میں نہیں، البتہ ان دونوں پارٹیوں میں ہی اچھے لوگ موجود ہیں ۔
ان کا کہنا تھا کہ پارٹی قیادت کے حوالے سے منظور وسان کا اشارہ میری جانب نہیں، ان سے میرا رابطہ ہے، انہوں نے خواب دیکھا ہے تو بندہ بھی دیکھا ہی ہو گا، انہوں نے خواب میں مجھے نہیں دیکھا ہوگا۔
عشرت العباد نے مزید کہا کہ ماضی میں مختلف جماعتوں کو ایک میز پر بٹھانے کی کوشش کی تھی تاکہ ان میں ہم آہنگی پیدا ہو۔
انہوں نے امید ظاہر کی کہ دونوں طرف کی قیادت کا امتحان ہوگا،ملک اور شہر کے لیے مثبت اور مل کر کام کریں، آپس میں لڑنے کا کوئی فائدہ نہیں ہے۔
سابق گورنر سندھ مزید کہتے ہیں کہ اس اتحاد کے حوالے سے بلایا گیا تو فی الحال جانے کا ارادہ نہیں، ممکنہ قیادت کے لیے ذہنی طور پر آمادہ ہی نہیں ہوں، دونوں جانب اچھے لوگ ہیں جو مل جل کر قوم کی رہ نمائی کرلیں گے۔
انہوں نے مزید کہا کہ ماضی میں جب ایم کیو ایم حقیقی بنی تو بہت عرصے بعد لوگوں نے اسے قبول کیا، مائنڈ سیٹ بدلنا بہت مشکل مرحلہ ہے، یہ دونوں پارٹیاں حقیقی کو نہ بھی ساتھ ملائیں تو بھی ورکنگ ریلیشن شپ توہو ہی سکتی ہے۔
انہوں نے کہا کہ نئی پارٹی کی سربراہی سے متعلق خبریں غلط ہیں، جنرل ریٹائرڈ پرویز مشرف کی اپنی پارٹی ہے، وہ اس پر توجہ دے رہے ہیں،قیادت عوام کی خواہش پر کی جاتی ہے۔

SHARE

LEAVE A REPLY