زینب کا قاتل عمران 14 روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے

0
71

) ننھی زینب کے قتل کے ملزم عمران کو لاہور کی انسداد دہشتگردی کی خصوصی عدالت نے 14 روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کر دیا۔ عدالت کے استفسار پر سرکاری وکیل نے جواب دیا کہ ڈی این اے رپورٹ کے بعد ملزم کو گرفتار کیا گیا۔

زینب کے قاتل عمران کو لاہور کی انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت میں سخت سکیورٹی میں پیش کیا گیا۔ عدالت نے سرکاری وکیل سے پوچھا کہ آپ کے پاس کیا ثبوت ہیں؟ انہوں نے بتایا کہ زینب کی ڈی این اے رپورٹ ہے۔ عدالت نے پوچھا کہ ملزم کی داڑھی تھی، وہ کہاں گئی؟ اس استفسار پر سرکاری وکیل نے جواب دیا کہ ملزم نے بچی کو زیادتی اور قتل کرنے کے بعد داڑھی کٹوا دی تھی۔ وکیل نے بتایا کہ 20 جنوری کو ملزم کے ڈی این اے کی تصدیق ہوئی اور پولی گرافک ٹیسٹ مثبت آیا۔ ملزم بچوں کو کھانے پینے کی چیزیں دے کر ورغلاتا تھا۔ تفتیشی افسر نے ملزم سے دیگر کیسز کی تفتیش کیلئے 15 روزہ جسمانی ریمانڈ کی درخواست کی۔ عدالت نے اسے 14 روز کیلئے پولیس کے حوالے کر دیا۔
دوسری جانب، قاتل عمران کی ڈی این اے رپورٹ دنیا نیوز کو موصول ہو گئی ہے جس کے مطابق، درندہ عاصمہ بی بی، تہمینہ، عائشہ آصف، ایمان فاطمہ، نور فاطمہ، لائبہ، کائنات بتول اور زینب امین نامی ننھی بچیوں کے ساتھ درندگی کرنے کے بعد انہیں قتل کرنے میں ملوث ثابت ہوا ہے۔

SHARE

LEAVE A REPLY