سیکورٹی ایکسچینج کمیشن نے اسٹاک ایکسچینج کے چیئرمین حسین لوائی کو فوری طور پر عہدے سے برطرف کرنے کے لئے ہدایات جاری کر دی ہیں۔

سیکورٹی ایکسچینج کمیشن کی جانب سے جاری کردہ اعلامیے کے مطابق کہا گیا کہ اسٹاک ایکسچینج انتظامیہ فوری طور پر نیا چیئرمین منتخب کرے۔

اعلامیےمیں مزید بتایاگیا کہ یہ ہدایات سیکورٹی ایکٹ 2015کی شق12اور 170کے تحت جاری کی ہیں۔

اعلامیے کے مطابق حسین لوائی کے خلاف اینٹی منی لانڈرنگ کے الزام میں ایف آئی آر درج ہو چکی اس لئے کیپٹل مارکیٹ اور مفاد عامہ میں حسین لوائی کو اسٹاک ایکسچینج کے چیئرمین کے عہدے سے ہٹایا جائے۔

یاد رہے کہ 6 جولائی کو ایف آئی اے نے حسین لوائی سمیت 3 اہم بینکرز کو منی لانڈرنگ کے الزام میں حراست میں لیا جس کے بعد عدالت نے انہیں اور طحہٰ رضا کو 11 جولائی تک جسمانی ریمانڈ پر ایف آئی اے کے حوالے کر دیا تھا۔

حسین لوائی اور دیگر کے خلاف درج کی گئی ایف آئی آر میں بڑی سیاسی اور کاروباری شخصیات کے نام شامل ہیںجس میں منی لانڈرنگ سے فائدہ اٹھانے والوں میں زرداری گروپ بھی ہےجنہوں نے منی لانڈرنگ میں ڈیڑھ کروڑ کی رقم وصول کی ہے۔

ایف آئی اے کی جانب سے عدالت میں 28 اکاوئنٹس کی تمام تفصیلات بھی پیش کردی گئی تھیں جبکہ تفتیشی افسر کا کہنا تھا کہ ملزمان نے 7 ارب روپے کی منی لانڈرنگ کی جبکہ ان سے 4 ارب روپے برآمد کر لیے گئے ہیں۔

بعدازاں عدالت نے تفتیشی افسر کو ملزمان کا میڈیکل کرانے کی ہدایت کرتے ہوئے آئندہ سماعت پر رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیا اور ملزمان کا 11 جولائی تک جسمانی ریمانڈ کی منظوری بھی دی ہے۔

SHARE

LEAVE A REPLY