افغان شہر غزنی میں جاری لڑائی میں اب تک ملکی دستوں کے اسی سے زائد اہلکار ہو چکے ہیں۔ صوبائی کونسل کے رکن ناصر فاروقی نے بتایا کہ صورتحال فی الحال انتہائی تباہ کن ہے۔ ان کے بقول شہر میں فوج کے تعاون کے بغیر صرف پولیس اور افغان خفیہ ادارے کے اہلکار طالبان کا مقابلہ کر رہے ہیں۔

اتوار کو لڑائی اس وقت شروع ہوئی، جب کابل حکومت نے نمایاں کامیابیاں حاصل کرنے کا دعوی کیا۔ اطلاعات کے مطابق طالبان نے گزشتہ تین دنوں کے دوران غزنی میں متعدد سرکاری عمارتوں کو نذز آتش کر دیا ہے۔

SHARE

LEAVE A REPLY