انقرہ؛ ترک عوام آج فیصلہ کریں گے۔ ملک میں پارلیمانی نظام چلے گا یا صدارتی تاریخی ریفرنڈم کیلئے پولنگ جاری ہے

فیصلہ عوام کریں گے۔ پارلیمانی نظام کے تحت فیصلے قبول ہیں یا اب ملک کو صدارتی نظام کی ضرورت ہے۔
ریفرنڈم کے تحت ترک آئین میں اٹھارہ ترامیم کی جائیں گی جو حکمراں جماعت جسٹس اینڈ ڈیلوپمنٹ پارٹی اور نیشنلسٹ موومنٹ پارٹی نے پیش کی ہیں۔

اگر عوام ریفرنڈم میں ہاں کہتے ہیں تو پی ایم ہاؤس ختم اور پارلیمانی نظام تحلیل کردیا جائیگا۔ اسکے ملک میں صدارتی نظام نافذالعمل ہوگا۔

پارلیمان میں نشستوں کی تعداد ساڑھے پانچ سو سے بڑھا کر چھ سو کردی جائیگی۔ سپریم بورڈ آف ججز میں تعیناتی کا مکمل کنٹرول صدر کے ہاتھ میں ہوگا۔

رفرنڈم کیلئے پولنگ کا عمل نو گھنٹے جاری رہیگا جس میں ملک بھر کے ساڑھے پانچ کروڑ عوام حق رائے دہی استعمال کریں گے۔ بیرون ملک موجود کم وبیش تیس لاکھ ترک عوام اپنے ووٹ ایک ہفتے پہلے ہی کاسٹ کرچکے ہیں

SHARE

LEAVE A REPLY