بھارت کے زیر انتظام جموں و کشمیر میں پُر تشدد کارروائیوں میں شدت آتی جا رہی ہے۔ پیر چوبیس اپریل کو پولیس نے سری نگر میں پتھراؤ کرنے والے اور بھارت کے خلاف نعرے لگانے والے سینکڑوں طلبہ پر فائرنگ کی ہے۔ نیوز ایجنسی اے ایف پی نے لکھا ہے کہ سری نگر کی سڑکوں پر احتجاجی مظاہرے میں شریک سینکڑوں طالب علم ’ہم آزادی چاہتے ہیں‘ اور ’گو انڈیا، گو بَیک‘ کے نعرے لگا رہے تھے۔

طلبہ اور سکیورٹی فورسز کے درمیان گزشتہ ہفتے کے تصادم کے نتیجے میں تقریباً ایک سو طلبہ اور اتنی ہی تعداد میں پولیس اہلکار بھی زخمی ہو گئے تھے، جس کے بعد حکام نے فوری طور پر تمام کالج اور یونیورسٹیاں بند کرنے کے احکامات جاری کر دیے تھے۔ ایک پولیس افسر نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر اے ایف پی کو بتایا ہے کہ چند ایک طلبہ کو حراست میں لیا گیا ہے جبکہ تین فوٹو جرنلسٹ اور آٹھ پولیس اہلکار پتھر لگنے سے زخمی ہوئے ہیں۔

SHARE

LEAVE A REPLY