پاراچنار کرم ایجنسی میں ایک دفعہ پھر اہل تشیع کا قتل عام

0
768

سنٹرل کرم ایجنسی کا چھوٹا شہر گودر۔۔۔۔۔ جہاں پر اہل تشیع کا صرف ایک گاؤں واقع ہے۔
آج صبح اسلام کے سفاک دشمنوں نے ان کا قتل عام کیا۔ وہاں کار بم دھماکے میں 10 سے زیادہ افراد شہید ہو چکے ہیں ۔
یہ حکومت اور فوج کی ناکامی اور تعصب کا منہ بولتا ثبوت ہے۔

کرم ایجنسی اور پاراچنار میں ایک خاص گروہ سرگرم عمل ہے جو کہ مسلسل اہل تشیع کا قتل عام کرا رہا ہے۔
حکومت کو اسکے تمام ٹھکانے معلوم ہیں اور ان کے عزائم سے بھی واقف ہے۔ لیکن حکومت نے
اس گروہ کے خلاف کوئی کاروائی نہیں کی

۔
وہ مسلسل اہل تشیع کو قتل کرنے پر لوگوں کو ابھارنے میں مصروف عمل ہے۔
بجائے اسکے حکومت ان کے خلاف کارروائی کرے وہ صرف پاراچنار شہر میں ریڈ زون قائم کرر ہی ہے

مقامی اہل تشیع ابھی تک پرامن رہے ہیں لیکن اسکا مطلب یہ نہیں کہ بقول انکے وہ اپنے دشمن کو جانتے نہیں۔
اور آج تک اس گروہ کے خلاف حکومت کی کاروائی کا انتظار کر رہے ہیں۔

تشدد کا شکار لوگوں کا کہنا ہے کہ اگر ہمارا خون مزید اسی طرح بہتا رہا تو پھر ہم اپنے خون کا بدلہ خود لینے کا اپنا خق محفوظ رکھتے ہیں۔

SHARE

LEAVE A REPLY