پی پی رہنما شرجیل میمن نے وزیرداخلہ کو چیلنج دیتے ہوئے کہا کہ حسین نواز کے خلاف جے آئی ٹی چل رہی ہے، ان کا نام ای سی ایل پر لے آئیں، میاں صاحب آپ کو نوکری سے نہیں نکالیں گے ۔

احتساب عدالت میں سابق وزیر اطلاعات سندھ شرجیل میمن و دیگر کے خلاف نیب ریفرنس کی سماعت ہوئی۔

شرجیل میمن کے وکیل نے عدالت سے کہا کہ ریفرنس کی دستاویزات مکمل نہیں ہیں،ان کی ترتیب بھی ٹھیک نہیں ہےجس سے ریفرنس سمجھنامشکل ہو رہا ہے۔

اس پر نیب کے وکیل نے کہا کہ تفتیشی افسر آکر تمام چیزیں سمجھا دے گا، دیگر ملزمان سندھ ہائی کورٹ میں مصروف ہیں۔

شرجیل میمن کے وکیل نے کہا کہ ان کے موکل کی طبیعت ٹھیک نہیں، جانے کی اجازات دی جائے جس کے بعد عدالت نےان کو جانے کی اجازت دیتے ہوئے ریفرنس کی سماعت 12 بجے تک ملتوی کر دی۔

شرجیل میمن نے سماعت کے بعد میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ کے الیکٹرک جانب سے لوگوں کو عذاب ہے، دیہی سندھ میں بجلی بیس، بیس گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ ہے، کراچی کی حالت سندھ کے دیہی علاقوں سے لاکھ درجے بہتر ہے، کے الیکٹرک مکمل طور پر ناکام ہوچکی ہے۔

انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت عوام کے لیے عذاب بن چکی ہے، وزیر اعظم اور انکی ٹیم کو سوچنا چاہئے انہوں نے رمضان میں عوام کو کیا تحفہ دیا،وزیر اعلیٰ سندھ نے ہر بڑے فورم پر آواز اٹھائی ہے اور پیپلز پارٹی نے بھر پور احتجاج کیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ مکمل طور پر وفاقی اور وزارت توانائی کی ناکامی ہے، اس ملک میں بادشاہت چل رہی ہے، نواز شریف اور انکی فیملی کا راج ہے،مخالفین پر جھوٹے مقدمے بنائے جارہے ہیں، میرا نام ای سی ایل پر اس وقت ڈالا گیا جب میرے خلاف کوئی کیس نہیں تھا۔

انہوں نے وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ تھوڑی ہمت دکھا دیں، آپ کی نوکری نہیں جائے گی ،آپ کو میاں صاحب نوکری سے نہیں نکالیں گے، حسین نواز کا نام ای سی ایل پر لے آئیں،انکے خلاف جے آئی ٹی چل رہی ہے۔ انصاف کے تقاضے پورے کررہے ہیں تو نواز شریف کی فیملی کا نام ای سی ایل میں ڈالا جائے

SHARE

LEAVE A REPLY