عائشہ گلالئی کے سابق معاون نور زمان نے نیب خیبر پختونخوا میں جمع کرائی گئی درخواست میں مؤقف اپنایا ہے کہ عائشہ گلالئی نے ترقیاتی منصوبوں میں ایک کروڑ سے زائد کا کمیشن لیا لہٰذا ان کے خلاف تحقیقات کی جائیں۔ نور زمان نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ وہ عائشہ گلالئی کی کرپشن کے گواہ ہیں اور اس کے ثبوت بھی موجود ہیں۔
نور زمان نے اس راز سے بھی پردہ اٹھایا کہ عائشہ گلالئی تین دفعہ گورنر ہاؤس گئیں اور وہ ہر دفعہ ان کے ساتھ تھے لیکن انہیں گیٹ پر روک لیا جاتا تھا اس لئے وہ نہیں جانتے کہ اندر کیا باتیں ہوتی تھیں؟
ادھر دنیا نیوز سے بات کرتے ہوئے آئی جی خیبر پختونخوا صلاح الدین محسود نے کہا کہ عائشہ گلالئی نے سکیورٹی کیلئے ابھی رابطہ نہیں کیا، اگر انہوں نے رابطہ کیا تو مکمل سکیورٹی فراہم کی جائیگی۔ ان کا کہنا تھا کہ عائشہ گلالئی بھی خیبر پختونخوا کی شہری ہیں اور ہر شہری کو تحفظ فراہم کرنا ہمارا فرض ہے۔

SHARE

LEAVE A REPLY