امریکا بھر میں نسل پرستی کے خلاف ریلیاں نکالی گئیں ، شرکا نے اتحاد اور یکجہتی کی اپیل کی جبکہ سفید فام نسل پرستوں نے بوسٹن میں ریلی کے دوران ہنگامہ آرائی کی جس پر پولیس نے 27 افراد کو گرفتار کر لیا ۔ بوسٹن فری سپیچ نامی تنظیم کی کال پر بوسٹن میں دائیں بازو کے کارکنوں نے ریلی نکالی جس کے خلاف بائیں بازو کے کارکنوں نے بھی احتجاجی جلوس نکالا ۔

دونوں گروہوں کے اجتماعات ریاست ورجینیا کے شہر شارلٹس ول میں ہونے والے مظاہروں کے ایک ہفتے بعد منعقد ہوئے ۔ بوسٹن فری سپیچ نے اعلان کیا تھا کہ اس کا گزشتہ ہفتے ہوئے سفید فام نسل پرستوں کے مظاہرے سے کوئی تعلق نہیں ، اس کے خلاف بوسٹن میں ہی بلیک لائیوز میٹر تحریک کی مقامی شاخ نے مظاہرہ کیا ، اس موقع پر پولیس کی بھاری نفری تعینات تھی ۔

سفید فام نسل پرستوں نے گٹار کی دھنوں پر نفرت کے گیت گانے شروع کر دیئے ۔ ہنگامہ آرائی پر پولیس نے 27 نسل پرستوں کو گرفتارکرلیا ہے ۔ دوسری جانب ریاست ٹیکساس کے شہر ہوسٹن ، کیلیفورنیا کے شہر وینس ، شمالی کیلیفورنیا کے شہر ڈیورہم میں بھی نسل پرستی کے خلاف ریلی نکالی گئی جس میں لوگوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی ۔

SHARE

LEAVE A REPLY