وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف اورنج لائن میٹروٹرین کی باقاعدہ نقاب کشائی کردی۔ اس موقع پر چین کے انجینئرز اور دیگر حکام بھی موجود تھے۔
تقریب رونمائی کے موقع پرمیڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعلیٰ پنجاب کا کہنا تھا کہ اورنج لائن ایک شہر کا نہیں پورے ملک کا منصوبہ ہے،اس میں روزانہ ڈھائی لاکھ لوگ سفرکریں گے۔
انہوں نے کہا کہ ٹرین کی سفری سہولت سےعوام مستفید ہوں گے،مخالفین نےآپ سےخوشحالی کا سفرچھیناہے،سیاسی مخالفین اورنج لائن ٹرین کو چلنے نہیں دینا چاہتے،لاہور کےعوام مخالفین کوپہچانیں۔عدالت اورنج لائن ٹرین پر جو بھی فیصلہ دےعمل کریں گے۔
انہوں نے مزید کہا کہ اورنج لائن ٹرین چین کا پاکستان کو تحفہ ہے،اورنج لائن ٹرین پرزندگی کےہرشعبےکےلوگ سفرکرسکیں گے۔
وزیر اعلیٰ پنجاب کو ٹرین میں موجود سہولیات پر بریفنگ بھی دی گئی۔
بجلی سے چلنے والی یہ آٹو میٹک ایئر کنڈیشنڈ ٹرین لاہور میں پاک چین دوستی کی چلتی پھرتی مثال ہوگی، 25 دسمبر تک جتنا روٹ تیار ہوگا اسی پر ٹرین چلے گی ۔
ڈیرہ گجراں سے علی ٹاؤن تک 27 کلومیٹر طویل روٹ پر 27 اورنج ٹرینیں رواں دواں نظر آئیں گی، ایک ٹرین میں ایک ہزار مسافروں کی گنجائش ہے، 200 افراد بیٹھ کر جبکہ آٹھ سو کھڑے ہو کر سفر کر سکیں گے۔
پانچ بوگیوں پر مشتمل ایک اورنج ٹرین میں ایک ہزار افراد سفر کر سکیں گے، دو سوافراد بیٹھ کر جبکہ آٹھ سو کھڑے ہوکر سفر کرسکیں گے۔یہ ٹرین 27 کلومیٹر کا فاصلہ 45 منٹ میں طے کرے گی ۔

SHARE

LEAVE A REPLY