وفاقی حکومت نے فیض آباد انٹرچینج میں جاری دھرنے کو ختم کروانے کے لیے پنجاب رینجرز کو اختیارات دے دیے۔

وزارت داخلہ کی جانب سے جاری نوٹی فیکیشن کے مطابق پنجاب رینجرز کے ڈی جی میجر جنرل اظہر نوید کو پورے آپریشن کا انچارج مقرر کردیا گیا ہے۔

نوٹی فیکیشن کے مطابق رینجرز کو ہدایات کی بجاآوری کے لیے ایک ہفتے کا وقت دیا گیا ہے اور خصوصی اختیارات 26 نومبر سے تفویض کردیے گئے ہیں جو 3 دسمبر 2017 تک نافذالعمل ہوں گے۔

قبل ازیں وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں فیض آباد کے انٹر چینج پر جاری مذہبی جماعتوں کے دھرنے کے باعث سیکیورٹی انتظامات رینجرز کے حوالے کرتے ہوئے پیراملٹری اہلکاروں نے فیض آباد کے اطراف پوزیشنز بھی سنبھال لی تھیں۔

فرنٹیئر کور (ایف سی) اور اسلام آباد پولیس کو اگلی پوزیشن سے ہٹا دیا گیا جبکہ وہ اس وقت فیض آباد پر رینجرز اہلکاروں سے پچھلی پوزیشنز پر چلے گئے ہیں۔

رینجرز حکام نے تصدیق کرتے ہوئے بتایا تھا کہ گزشتہ روز پولیس، انتظامیہ اور رینجرز حکام کا اجلاس ہوا تھا جس میں رینجرز کی تعیناتی کا فیصلہ کیا گیا تاہم اب ایک ہزار سے زائد پیرا ملٹری اہلکار فیض آباد کے اطراف میں تعینات ہیں جس کا مقصد جلاؤ گھیراؤ کو روکنا ہے۔

عدالتی حکم کے بعد فیض آباد دھرنے کو ختم کرنے کے لیے پولیس کارروائی کے دوران مظاہرین کے ساتھ جھڑپ کے نتیجے میں اب تک 6 افراد ہلاک ہو چکے ہیں جبکہ متعدد افراد زخمی ہیں۔

SHARE

LEAVE A REPLY