تحریک لبیک یا رسول اللہ نے کراچی میں بھی دھرنا ختم کرنے کا اعلان کر دیا ہے ، سابق وفاقی وزیر قانون زاہد حامد کی جانب سے دیئے گئے ایک بیان پر تحریک کی جانب سے ملک گیر احتجاج کا سلسلہ شروع ہوا تھا جس کے دوران شرکا نے زاہد حامد کے استعفے کا مطالبہ کیا تھا ۔ زاہد حامد نے پہلے استعفیٰ دینے سے انکار کیا اور اس بات پر مصر رہے کہ انہوں نے کبھی کوئی ایسی بات نہیں کہی جس سے حضور پاک کی شان میں گستاخی کا احتمال بھی ہو وہ سچے مسلمان اور عاشق رسول ہیں مگر اس کے باوجود تحریک کی قیادت اور کارکن اس بات پر مصر رہے کہ زاہد حامد کے استعفے کے بغیر کوئی بات آگے نہیں بڑھ سکتی ۔

مظاہرین کے احتجاج پر گزشتہ روز زاہد حامد نے وزیر اعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف سے ملاقات کرکے مستعفی ہونے کی خواہش کا اظہار کیا تھا تاکہ ملک بھر میں ہونے والے مظاہروں کا سلسلہ روکا جا سکے اور حالات زندگی کو معمول پر لایا جاسکے ۔ زاہد حامد کے مستعفی ہونے کی خبر سنتے ہی تحریک لبیک یا رسول اللہ کی قیادت نے مذاکرات پر آمادگی ظاہر کی جس کے بعد تحریک کی قیادت نے دھرنا ختم کرنے کا اعلان کر دیا ، دھرنے کے شرکا اسلام آباد سے روانہ ہونا شروع ہوگئے اور قیادت نے کارکنوں کو پیغام بھجوایا کہ وہ پرامن طور پر دھرنے کی جگہ سے منتشر ہوجائیں ۔

SHARE

LEAVE A REPLY